بدھ9؍شعبان المعظم 1442ھ24؍مارچ 2021ء

سندھ حکومت کے پاس ویکسین ہی نہیں ہے، وفاق دے رہا ہے، اسد عمر

وفاقی وزیر کا کہنا ہے کہ سندھ میں ڈاکو راج کی وجہ سے لوگوں کو دبایا جا رہا ہے، یہ ڈاکو راج اب نہیں رہے گا۔

اسد عمر نے کہا ہے کہ  جسٹس (ر) شیخ عظمت سعید آج انہیں برے لگ رہے ہیں، پاناما کیس کے بینچ میں جسٹس (ر) عظمت سعید بھی شامل تھے، اس وقت تو مٹھائیاں بانٹ رہے تھے، اس وقت انہیں اعتراض نہیں تھا، اب اعتراض کر رہے ہیں۔

وفاقی وزیر نے کہا وزیر اعلی سندھ کہتے تھے بھوک سے کوئی نہیں مرتا، لیکن وزیر اعظم کو عوام کی بھوک کا احساس تھا، وفاق نے اپنی ذمے داریاں سمجھتے ہوئے اربوں روپے صوبوں میں تقسیم کیے، عمران خان بار بار کہتے ہیں سندھ کے عوام پر ظلم ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی پہلی ذمےداری لوگوں کے جان ومال کا تحفظ ہے، سندھ کے عوام کا یہ حال ہوگیا ہے تو وفاق کو کردار ادا کرنا چاہیے یانہیں، ہم صوبے کے مسائل کے حل کی بات کرتے ہیں تو کہا جاتا ہے کہ اٹھارویں ترمیم کے خلاف کر رہے ہیں، بااختیار ہونا اور آزاد ہونا ایک چیز نہیں ہے۔

اُن کا عالمی وبا کورونا وائرس سے متعلق بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کی لیے وفاق نے اپنی تمام ذمےداریاں پوری کیں، وفاق نے کوروناوائرس  کے دنوں میں اپنی ذمے داری پوری کی، وزیراعظم عمران خان کو غریب اور مزدور طبقے کا خیال تھا، جب مستحق لوگوں میں پیسا تقسیم کیا جا رہا تھا تو وزیراعلیٰ کہہ رہےتھے کہ یہ مجرمانہ فعل ہے۔

اسد عمر نے کہا کہ سندھ حکومت کے پاس ویکسین ہی نہیں ہے، وفاق دے رہا ہے، ویکسین پر بھی سیاست کی جارہی ہے شرم کی بات ہے، سندھ حکومت کو شرم آنی چاہیے، سندھ حکومت کے ظلم و جبر کی بات کی جائے تو ان کو 18ویں ترمیم یاد آجاتی ہے۔

بشکریہ جنگ
You might also like

Comments are closed.