اتوار22؍ رجب المرجب 1442ھ 7؍مارچ2021ء

اوپنرز آوٹ آف فارم ہیں، اعتماد دینے کی ضرورت ہے، مصباح الحق

قومی کرکٹ ٹیم کے ‏ہیڈ کوچ مصباح الحق کا اوپنرز سے متعلق کہنا ہے کہ  اوپنرز آوٹ آف فارم ہیں، اُنہیں اعتماد دینے کی ضرورت ہے، ان کی خامیوں پر کام کریں گے۔

مصباح الحق نے میڈیا سے آن لائن گفتگو کرتے ہو ئے کہا ہے کہ جیت سے ٹیم کا مورال بلند ہوا ہے، ٹی ٹونٹی سیریز میں جیت کے تسلسل کو برقرار رکھیں گے، کرکٹ کمیٹی نے نیوزی لینڈ کی سیریز کے بعد جو کہا اس کا دباؤ نہیں تھا، میرا فوکس صرف کھیل پر ہوتا ہے، دباؤ صرف اس بات کا تھا کہ اچھا پرفارم کر کے جیتنا ہے، ساوتھ افریقا کے خلاف ہم اچھا کھیلے اور جیتے جس کی خوشی بھی ہے اور اطمینان بھی ۔

‏ ہیڈ کوچ مصباح الحق نے کہا ہے کہ ساؤتھ افریقا نے عرصہ دراز کے بعد پاکستان کا دورہ کیا، ہوم سیریز ہمارے لیے بڑی اہمیت کی حامل تھی،  ایک تو اپنی کنڈیشنز میں کھیل کر ٹیم اچھا پرفارم کرتی ہے اور اس پر کوئی دباؤ نہیں ہوتا تو دوسرا کھلاڑیوں کو بھی ڈویلپ کرنے کا موقع ملتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ساؤتھ افریقا کے خلاف کامیابی کا کریڈٹ پوری ٹیم کو جاتا ہے، لوئر آرڈر نے اچھا پرفارم کیا، ببیٹسمین اور بولرز تو اچھا کھیلتے ہو ئے آرہے تھے لیکن ہمیں کامیابی نہیں مل رہی تھی، اس سیریز میں فیلڈنگ میں بہتری آئی ہے، ہم نے چانس مس نہیں کیے اور میں سمجھتا ہوں کہ اس سیریز میں فرق فیلڈنگ کا تھا جس کی وجہ سے کامیابی ہمیں ملی۔

‏ مصباح الحق کا کہنا تھا کہ ہماری ٹیم میں اتنا تجربہ نہیں ہے جتنا پہلے تھا لیکن کھلاڑیوں میں بہت پوٹینشل ہے، وہ موقع سے فائدہ اٹھائیں گے، ٹیم کو مکمل طور پر ناتجربہ کار بھی قرار نہیں دیا جا سکتا کیونکہ اس میں متعدد کھلاڑی ایسے ہیں جو مسلسل ٹیم میں کھیلتے ہو ئے بھی آرہے ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ نیشنل ہائی پرفارمنس سینٹر میں میں بھی موجود ہوں گا ایک ڈیڑھ ماہ ان پر کام کیا جائے گا، ہم اپنے اوپنرز کو ضائع نہیں کر سکتے اور نہ ہمیں ایک دو سیریز کے بعد انہیں تبدیل کرنا چاہیے، عابد علی، شان مسعود عمران بٹ اور عبداللّٰہ شفیق کے علاوہ کوئی پرفارم کرتا ہوا اوپنر نظر نہیں آرہا،  اس لیے ان پر کام کریں گے۔

‏ہیڈ کوچ مصباح الحق نے کہا کہ محمد رضوان اور فہیم اشرف کو ساتھ لے کر اسی لیے چل رہے تھے کہ ان میں بہت ٹیلنٹ ہے جو کہ انہوں نے ثابت کیا ہے، ہمیں اندازہ تھا کہ یہ ہمارے لیے مفید ثابت ہوں گے اور وہ ہوئے ہیں، دونوں اس وقت ہماری ٹیم کے پلرز ہیں،  دونوں تسلسل کے ساتھ پرفارم کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں ساتویں نمبر پر بالنگ آل راؤنڈر کی ضرورت تھی فہیم اشرف نے ہماری ضرورت پوری کی ہے، محمد رضوان بہت محنتی ہے، اسے موقع دیا جس کا اس نے فائدہ اٹھایا۔

‏اعظم خان اور شرجیل خان کی ٹیم میں شمولیت کے بارے میں مصباح الحق نے کہا کہ پاکستان ٹیم میں آنے کے لیے ہر کسی کو فٹنس اسٹینڈرڈ حاصل کرنا ہے، اسی طرح اعظم خان اور شرجیل خان کو فٹنس کا معیار حاصل کرنا ہے، فٹنس کے حوالے سے انہیں پیغام پہنچ چکا ہے، دیکھتے ہیں کہ وہ کیسے یہ اسٹینڈرڈ حاصل کرتے ہیں۔

بشکریہ جنگ
You might also like

Comments are closed.