بدھ4؍ رجب المرجب 1442ھ 17؍فروری 2021ء

اسلام آباد ہائیکورٹ، ڈیپوٹیشن پر آئے اساتذہ کو صوبوں میں واپس بھیجنے کا حکم معطل

اسلام آباد ہائیکورٹ نے ڈیپوٹیشن پر آئے اساتذہ کو واپس صوبوں کو بھیجنے سے روک دیا اور حکم امتناع جاری کردیا، کمرہ عدالت میں موجود خواتین اساتذہ خوشی سے نہال ہوگئیں۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے 11دسمبر 2020 کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے حکم امتناعی جاری کردیا اور کہا کہ بادی النظر میں وفاقی نظامت تعلیمات کا حکم نامہ برقرار نہیں رہ سکتا، عدالت نے ڈی جی وفاقی نظام تعلیمات کو کیس کی آئندہ سماعت پر 9 مارچ کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا ۔

عدالت نے کہا کہ وفاقی نظامت تعلیمات بتائیں ایسا حکم نامہ کیوں جاری کیا گیا؟ ڈائریکٹر لیگل وفاقی نظامت تعلیمات کو قانون کا کوئی علم نہیں؟ ڈی جی آکر وضاحت کرے ڈیپوٹیشن پرکام کرنے والی اساتذہ کو کیوں دربدرکیا جارہا ہے؟

چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیئے کہ ڈائریکٹر لیگل اس عدالت کو گمراہ کررہے ہیں، ایسے یکطرفہ فیصلوں سے اساتذہ ڈی چوک بیٹھنے پرمجبور ہوئے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے آرڈرمعطلی کے بعد استاتذہ کے پاس اسکول جانے کاراستہ کھل گیا ہے۔

بشکریہ جنگ
You might also like

Comments are closed.