جمعہ11؍شعبان المعظم 1442ھ 26؍مارچ2021ء

علی سدپارہ کی بیس کیمپ میں ڈانس ویڈیو زیرگردش

یاد رہے کہ محمد علی سدپارہ اور ان کی ٹیم کی کے ٹو پر تلاش کے لیے سرچ آپریشن آج تیسرے روز بھی جاری ہے، دنیا کے دوسرے بلند ترین پہاڑ کے ٹو پر ہلکے بادلوں کے باعث حد نگاہ کم ہے۔

لاپتہ پاکستانی کوہِ پیما علی سدپارہ کے صاحبزادے ساجد سدپارہ کا کہنا ہے کہ ایسا لگتا ہے واپسی پر علی سدپارہ کیساتھ کوئی حادثہ ہوا ہے۔

علی سدپارہ کے صاحبزادے ساجد سدپارہ نے پروگرام’جیو پاکستان‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 3 دن پہلے دوپہر12 بجے کے قریب والد سے رابطہ ہوا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اب ایسا لگتا ہے کہ والد کے بچنے کے چانسز کم ہیں، آخری بار والد کو 8200 کی بلندی پر دیکھا تھا، دوپہر12بجے کے قریب میں نیچے آیا تھا۔

ساجد سدپارہ نے بتایا کہ جب میں نیچے آیا تب علی سدپارہ اور ٹیم اوپر چڑھ رہے تھے، جہاں تک مجھے لگتا ہے والد نے کے ٹو سر کر لیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آکسیجن سلینڈر کا استعمال پریشر کے مطابق ہوتا ہے، اگر2 آکسیجن سلینڈر موجود ہوں تو کم از کم2دن گزار سکتے ہیں، تمام چیزیں مد نظر رکھتے ہوئے لگتا ہے والد کے بچنے کے چانسز کم ہیں۔

بشکریہ جنگ
You might also like

Comments are closed.