پیر27رمضان المبارک 1442ھ 10؍مئی2021ء

حیرت انگیز نتائج دینے والی’کھیرا ڈائیٹ‘ کیا ہے؟

ہر موسم میں با آسانی مارکیٹ میں دستیاب سلاد میں شمار کیے جانے والا کھیرا گرمی کی شدت کم کرنے سمیت ڈیہائیڈریشن یعنی کہ پانی کی کمی سے بھی بچاتا ہے، موسم گرما میں کھیرے کا استعمال بڑھ جاتا ہے جس کے صحت پر متعدد حیرت انگیز فوائد مرتب ہوتے ہیں۔

غذائی ماہرین کے مطابق کھیرے میں کیلوریز نہ ہونے کے برابر جبکہ دیگر منرلز اور وٹامنز کی بھر پور مقدار پائی جاتی ہے، درمیانے سائز کے ایک کھیرے میں 30 کیلوریز، صفر گرام فیٹ، 6 گرام کاربز، 3 گرام پروٹین، 2 گرام فائبر، 10 فیصد وٹامن سی، 57 فیصد وٹامن کے، 9 فیصد میگنیشیم، 12 فیصد پوٹاشیم اور 9 فیصد میگنیز پایا جاتا ہے۔

موسم گرما کے آتے ہی پانی اور مشروبات کا استعمال بڑھ جاتا ہے جبکہ ہیٹ ویو، لو اور تپتے سورج سے بچاؤ کے لیے باآسانی گھر میں ہی تیار ہونے والے میٹھے، خوش زائقہ اور ٹھنڈے مشروبات کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔

سخت پتوں پر مشتل کانٹے دار جنگلی پودے ایلویرا کو گھیکوار بھی کہا جاتا ہے، ایلو ویرا کے پتوں میں موجود لیس دار مادہ انسانی صحت کے لیے نہایت مفید ہے، اسے براہ راست کھانے سمیت خوبصورتی میں اضافے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق وزن میں کمی لانے والے افراد کے لیے گرمیوں کا موسم بہترین موسم مانا جاتا ہے، کھیرے کا ڈیٹاکس واٹر میں استعمال کر کے پانی کی کمی اور مضر صحت مادوں کے نقصانات سے بچا جا سکتا ہے، گرمیوں میں غذا کے بجائے کھیرے کا مختلف تازہ سبزیوں کے ساتھ اسموتھی بنا کر استعمال کیا جا سکتا ہے جس کے نتیجے میں انسان خود کو ترو تازہ اور فرحت بخش محسوس کرتا ہے۔

آج کل ہر جگہ کھیرا ڈائٹ کا بھی بہت نام لیا جا رہا ہے جس کے نتائج بھی حیران کن ثابت ہوتے ہیں، کھیرا ڈائٹ سے متعلق معلومات مندرجہ ذیل ہیں جس کے استعمال سے وزن میں کمی سمیت مجموعی صحت سے متعلق متعدد فوائد حاصل کیے جا سکتے ہیں۔

ایک نئی تحقیق کے نتیجے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اگر ورزش سے قبل کڑک بلیک کافی کا استعمال کر لیا جائے تو جسم میں موجود اضافی چربی تیزی سے جلتی ہے۔

کھیرا ڈائٹ ہے کیا ؟

کھیرا ڈائٹ یعنی کہ ’کوکمبر ڈائٹ‘ ایک مختصر عرصے کی ڈائٹ ہے جو وزن میں کمی لانے میں معاون ثابت ہوتی ہے، اس ڈائٹ کے ذریعے 7 دن میں 7 کلو تک وزن کم کیا جا سکتا ہے۔

کھیرا ڈائٹ کھیرے اور چند پروٹین پر مشتمل غذاؤں جیسے کہ انڈہ، مرغی کا گوشت، مچھلی اور خشک میوہ جات کے ساتھ ملا کر لی جاتی ہے، کھیرے غذا کا متبادل بن جاتے ہیں اور دیگر غذاؤں کا استعمال کم سے کم کیا جاتا ہے، اس ڈائٹ میں غذاؤں کے آپشن کم ہونے کے سبب اسے کم سے کم 7 دن تک ہی کیے جانے کا مشورہ دیا جاتا ہے، اس ڈائٹ کو 7 دن سے زائد کرنے کے نتیجے میں یہ نقصان دہ بھی ثابت ہو سکتی ہے۔

ایک نئی ریسرچ کے نتیجے میں یہ بات سامنے آ ئی ہے کہ مثبت غذا اور متحرک طرز زندگی مرد و خواتین کی ذہنی صحت کی بہتری میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔

ذہنی دباؤ، اسٹریس پر کی گئی ایک نئی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ تھوڑا بہت، ہلکا پھلکا ذہنی دباؤ انسانی صحت کے لیے اچھا ثابت ہوتا ہے۔

ماہرین کی جانب سے اس ڈائٹ کے دوران پروٹین والی غذاؤں کے ساتھ کھیرے کا استعمال تجویز کیا جاتا ہے، اس ڈائٹ کے دوران کاربوہائیڈریٹ والی غذائیں جیسے ڈبل روٹی، براؤن رائس یا آلو کھانے کی بھی اجازت ہوتی ہے۔

کوکمبر ڈائٹ کا طریقۂ کار ؟

اس ڈائٹ کے دوران ناشتے میں دوانڈے کھیرے کے ساتھ کھا سکتے ہیں، کھیرے کی مقدار کی کوئی قید نہیں ہے، بھوک لگنے پر دو کھیرے کھائے جا سکتے ہیں۔

دوپہر کے کھانے میں دہی اور لیموں پانی کے ساتھ کھیرے کی سلاد کھائیں کچھ دیر بعد بھوک محسوس ہو تو کھیرے سے بنی سلاد ہی کھائیں۔

رات کے کھانے میں ابلی ہوئی یا زیتون کے تیل میں ہاف فرائی کی ہوئی چکن کے ساتھ ایک کپ براؤن چاول لیے جا سکتے ہیں جبکہ کھیرے سے بنی سلاد لازمی ہے۔

طبی ماہرین کی جانب سے وائرل، انفیکشن اور دیگر بیماریوں سے بچاؤ کے لیے قوت مدافعت مضبوط اور نیند پوری کرنا تجویز کیا جاتا ہے مگر مصروف، بھاگتی دوڑتی روٹین کے دوران نیند کے مسائل بڑھ جاتے ہیں اور قوت مدافعت کمزور پڑنے لگتا ہے جس کا علاج گھر میں موجود دیسی مسالوں سے بنائے گئے مشروب سے کیا جا سکتا ہے ۔

اگر نئے سال کی آمد پر آپ نے بھی اپنے اس سال کی منصوبہ بندی میں وزن کم کرنا اور سلم اور اسمارٹ نظر آنے کا سوچ رکھا ہے تو ماہرین کی جانب سے 2021ء کے لیے تجویز کردہ چند ورزشوں سے بہت کم وقت میں بہت زیادہ نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں۔

اس ڈائٹ کے دوران صرف سادہ پانی پئیں، کولا مشروبات ہر گز استعمال نہ کریں، پانی میں کھیرے اور لیموں کے قتلے کاٹ ڈالے جا سکتے ہیں۔

نوٹ: یہ ایک دن کی کھانے پینے کی روٹین ہے جس پر زیادہ سے زیادہ 7 دن تک سختی سے عمل کرنا ہے۔

اس ڈائٹ کے دوران کونسی غذائیں کھائی جا سکتی ہیں اُن کی فہرست مندرجہ ذیل ہے:

اس ڈائٹ کے دوران سبزیوں میں کھیرے، ٹماٹر، پالک یا کم مقدار میں دیگر سبزیوں کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔

پروٹین کی مقدار حاصل کرنے کے لیے مرغی، روکھا گوشت، مچھلی، انڈے، دہی اور پنیر لیا جا سکتا ہے۔

کاربو ہائیڈریٹ والی غذاؤں میں براؤن چاول، آلو، چکی کے آٹے کی روٹی کھائی جا سکتی ہے۔

چکنائی میں صرف زیتون کا تیل استعمال کیا جا سکتا ہے۔

موسم گرما کی غذا میں ایسی غذائیں ضرور شامل ہوں جو قدرتی طور پر آپ کو ٹھنڈا رکھ سکیں۔ ضرورت سے زیادہ گرمی آپ کی مجموعی صحت کو نقصان پہنچا سکتی ہے۔ مناسب ہائیڈریشن اور صحت مند غذا گرمی کو قدرتی طور پر شکست دینے میں مدد فراہم کرسکتی ہے۔

طبی ماہرین کی جانب سے صحت مند زندگی اور لمبی عمر کے حصول کے لیے دن کی غذا میں میں دو حصے پھل اور 3 حصے سبزیوں کا استعمال تجویز کیا جاتا ہے۔

کھیرے کھانے کے نتیجے میں صحت پر حاصل ہونے والے حیرت انگیز فوائد:

کھیرے کے استعمال سے جوڑوں کے درد سے نجات حاصل ہوتی ہے۔

جسم میں کولیسٹرول کی زیادتی کا شکار افراد کے لیے کھیرا نہایت مفید ثابت ہوتا ہے، کھیرے کے استعمال سے کولیسٹرول لیول متوازن رکھنے میں مدد ملتی ہے۔

کھیرا نظام ہاضمہ بہتر کرنے میں بہت اہم کردار ادا کرتاہے۔

کھیرا کینسر جیسے امراض سے بھی محفوظ رکھنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

کھیرے میں 95فیصد پانی ہوتا ہے اسی لیے یہ جسم میں پانی کی مقدار کم ہونے سے بچاتا ہے، جسم میں نمکیات کی کمی کو دور کرتا ہے اور ڈیہائیڈریشن سے بچاتا ہے۔

کھیرا ذیابطیس کے مریضوں کے لیے بھی ایک بہترین غذا ہے کیونکہ اس سے ذیابطیس کنٹرول کرنے میں مدد ملتی ہے۔

کھیرا گردوں کی بھی صفائی کرتا ہے اور جسم کو اضافی یورک ایسڈ سے بھی بچاتا ہے۔

بشکریہ جنگ
You might also like

Comments are closed.