’’وزیر اطلاعات نے غیر ذمہ دارانہ بیان دیا‘‘

’’وزیر اطلاعات نے غیر ذمہ دارانہ بیان دیا‘‘

October 31, 2018 - 13:05
Posted in:

چیف جسٹس میاں ثاقب نثارنے کہا ہے کہ وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے غیر ذمہ دارانہ بیان دیا، کیا اس طرح بیان دیا جاتا ہے؟سپریم کورٹ آف پاکستان نے آئی جی اسلام آباد کے تبادلے پروفاقی وزراء فواد چوہدری اوراعظم سواتی کے بیانات کا سخت نوٹس لے لیااور دونوں وزراء اور متاثرہ خاندان کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا، چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے از خود نوٹس کی سماعت کی۔عدالت کی طلبی پر وزیر اطلاعات فواد چوہدری کے علاوہ اٹارنی جنرل، سیکریٹری اسٹیبلشمنٹ اور سیکریٹری داخلہ بھی عدالت میں پیش ہوئے۔ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے آئین کی کتاب لہرا کرریمارکس دیئے کہ سپریم کورٹ آئی جی کو نہیں ہٹا سکتی لیکن یہ سپریم کورٹ ہی تھی جس نے اس آئین کے تحت وزیر اعظم کو گھر بھیجا تھا۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ایسا کیا آتش فشاں پھٹ گیا تھا کہ آئی جی کے خلاف فوری اقدام کیا، وزیراطلاعات نے غیر ذمہ دارانہ بیان دیا،کیا اس طرح بیان دیا جاتا ہے؟ ایسا ہم سوچ بھی نہیں سکتے، غیرذمے داری کی بھی حد ہوتی ہے۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کوئی شک نہیں کہ وزیر اعظم چیف ایگزیکٹو ہیں۔اٹارنی جنرل نے آئی جی اسلام آباد کے تبادلے کی رپورٹ عدالت میں پیش کر دی۔اٹارنی جنرل نے بتایا کہ آئی جی اسلام آباد جان محمد کے تبادلے کی سمری تیار کرنے کا حکم وزیر اعظم نے دیا، وزیر مملکت شہر یار آفریدی نے وزیر اعظم کو آئی جی اسلام آباد کو ہٹانے کا کہا تھا، چند دن قبل وزیر خزانہ اسد عمر نے بھی آئی جی کی تبدیلی کے لیے کہا، وزراء آئی جی اسلام آباد کی کارکردگی سے مطمئن نہیں تھے، آئی جی کے ہوتے ہوئے اسلام آباد میں جرائم اور منشیات میں اضافہ ہوا۔بشکریہ جنگbody {direction:rtl;} a {display:none;}