ڈیزائنر لان: اس جنون کی وجہ کیا ہے؟

ڈیزائنر لان: اس جنون کی وجہ کیا ہے؟

June 09, 2019 - 08:19
Posted in:

صرف چند سال پہلے ہی پاکستان میں شروع ہونے والا ڈیزائنر لان کا نیا ٹرینڈ اب ایک جنون بن چکا ہے۔آج کل ہر دوسری خاتون کی یہی کوشش ہوتی ہے کہ وہ ڈیزائنرلان کا سوٹ ہی زیب تن کریں۔ اس مقبولیت کے باعث شاید تھری پیس سوٹ اب بالکل مختلف اور جدید شکل اختیار کر چکا ہے اور شاید یہی وجہ ہے کہ کئی بار خواتین کو ڈیزائنرلان کے لیے دکانوں پر کھینچا تانی کرتے اور آپس میں گتھم گتھا ہوتے بھی دیکھا گیا ہے۔ بی بی سی نے یہ جاننے کے کوشش کی ہے کہ خواتین کے ڈیزائنر لان کو اس قدر شدت سے پسند کرنے کی وجہ کیا ہے اور اس کے حصول میں وہ کن کن 'کٹھن مراحل' کو پار کرتی ہیں۔یہ بھی پڑھیے اپنے خون سے کپڑے بننے والی فیشن ڈیزائنرٹیکسٹائل برآمدات مسلسل گر رہی ہیں’اگر سکرٹ پہنی تو جہاز سے اترنا پڑ سکتا ہے‘'پسندیدگی کی وجہ'اسلام آباد کی ایف ٹین مارکیٹ میں شاپنگ کے لیے آئی خاتون مریم نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ باقاعدگی سے ڈیزائنرلان پہنتی ہیں۔ ان کے نزدیک ڈیزائنر لان کے اس جنون کی سب سے بڑی وجہ اس کی اعلی کوالٹی اور جدید ڈیزائنز ہیں اور ان سلی لان لے کر اسے اپنے ڈیزائن میں سلوانا انھیں انتہائی آسان لگتا ہے۔

'اکثر خواتین کو نہ بھی کرنا پڑتی ہے'اسلام آباد میں ایک برانڈ کے سٹور مینجیر نے بی بی سی کو بتایا کہ موسم گرما کے دوران ہر ایک ماہ بعد لان کا نیا والیم مارکیٹ میں لایا جاتا ہے جس سے خواتین کے پاس چوائس بڑھ جاتی ہے۔ انھوں نے بتایا کے عید وغیرہ کے موقع پر آنے والے والیمز کی مانگ اتنی زیادہ ہوتی ہے کہ اکثر اس دوران دو دو والیمز بھی لائے جاتے ہیں۔تاہم انھوں نے خواتین کو مشورہ دیا کہ وہ آن لائن شاپنگ کے بجائے سٹورز میں آ کر اپنے ڈیزائن کا انتخاب کریں کیونکہ کسی چیز کو سامنے سے دیکھ کر ہی آپ اس کے ڈیزائن کا صحیح اندازہ لگا سکتے ہیں۔وہ کہتے ہیں کہ ہر والیم میں سے تین سے چار ڈیزائن سب سے زیادہ مقبول ہوتے ہیں اور ہر خاتون کی کوشش ہوتی ہے کہ وہ وہی ڈیزائن خریدے۔ انھوں نے بتایا ’اگر ایک آؤٹ لیٹ سے ایک ڈیزائن نہ ملے تو ہم خواتین کو اپنی دوسری برانچ سے بھی ڈیزائن منگوا کر دیتے ہیں لیکن پھر بھی کبھی کبھی کسی خاص ڈیزائن کی ڈیمانڈ اتنی زیادہ ہوتی ہے کہ اکثر خواتین کو نہ بھی کرنا پڑتی ہے۔‘

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}