پشاور حملہ: خون، گولیوں کے نشانات اور بکھرے بستر

پشاور حملہ: خون، گولیوں کے نشانات اور بکھرے بستر

December 02, 2017 - 10:06
Posted in:

اس آپریشن میں پشاور کے سینیئر سپرنٹنڈنٹ پولیس آپریشن سجاد خان نمایاں نظر آئے کیونکہ انھیں صبح جب اطلاع ملی تو وہ رات کو سادہ ٹراوزر اور شرٹ پہلے ہوئے تھے اور اسی لباس میں بلٹ پروف جیکٹ پہن کر حملہ آوروں کے خلاف کارروائی میں حصہ لیا۔ اسی طرح قریبی تھانوں کے انسپکٹرز نے بھی اہم کردار ادا کیا ہے۔ جس وقت یہ کارروائی شروع ہوئی اس وقت نجی چینل 24 نیوز کے رپورٹر رحم خان یوسفزئی موقع پر پہنچ گئے تھے انھیں ٹانگ میں ایک گولی لگی۔ یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ گولی کہاں سے آئی۔ آپریشن کے دوران دیگر صحافیوں کو اس عمارت سے دور رہنے کی تلقین کی جاتی رہی جہاں سے صرف یہ نظر آتا رہا کہ ایمبولینسز اور سیکیورٹی فورسز کی گاڑیاں آ اور جا رہی ہیں۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}