سوات ٹریفک جام میں سیاح پھنس گئے

سوات ٹریفک جام میں سیاح پھنس گئے

December 02, 2018 - 00:05
Posted in:

سوات میں آبادی بڑھنے اور سڑک پر تجاوزات قائم ہونے کی وجہ سے ہر وقت ٹریف جام رہنے لگا ہے ، شہری پریشان اور سیاح ٹریفک میں پھنسے رہتے نظر آتے ہیں ، جس کے باعث وادی کا خوب صورت حسن ماند پڑنے لگا ہے ۔ شہری انتظامیہ بھی مسلے کو حل کرنے میں بالکل سنجیدہ نظر نہیں آتی ۔خیبر پختونخوا کے وزیر اعلی محمود خان نے ٹریفک مسائل کو کم کرنے کیلئے دریائے سوات پر مزید دو رابطہ پلوں کے بنا نے کی منظوری بھی دی ہے، مگر پلوں کے تعمیر ہونے کا امکان بھی دور دور تک نظر نہیں آتا ، لینڈ سلائیڈنگ کے باعث سوات کے دونوں طرف کی سڑک بند ہوگئی ہے، جس کی وجہ سے سیاح اور مقامی افراد پھنس گئےہیں۔ ضلعی انتظامیہ کے مطابق ہیوی مشینری کے ذریعے سڑک کھولنے کا کام جاری ہے، صبح تک ہر قسم کے ٹریفک کےلیے بحال کردی جائے گی۔آبادی کے لحاظ سے خیبر پختونخواہ کے تیسرے بڑے ضلع سوات میں ٹریفک کے بڑھتے ہو ئے مسائل نے شہریوں کی مشکلات میں اضافہ کردیا ہے،حالیہ مردم شماری کے مطابق ضلع سوات کی آبادی 23 لاکھ افراد سے زیادہ ہیں، جوکہ خیبر پختونخواہ میں پشاور اور مردان کے بعد آبادی کے لحاظ سے تیسرا بڑا ضلع ہے، تاہم بڑھتی ہوئی آبادی اور تنگ سڑکوں کے باعث ٹریفک کے مسائل بھی بڑھ رہے ہیں، جس سے اس حسین وادی کے مکینوں کے ساتھ ساتھ آنے والے سیاحوں کو بھی مشکلات کا سامنا ہے۔شہریوں کا کہنا ہے کہ تنگ سڑکوں کی وجہ سے ٹریفک کا بوجھ بڑھتا جارہا ہے، نان کسٹم پیڈ گاڑیوں اور رکشوں کے باعث2 منٹ کا راستہ گھنٹوں میں طے کرنا پڑتا ہے، انتطامیہ سے درخواست ہے کہ ٹریفک کیلئے متبادل راستہ ڈھونڈے، ہمارے بچے اور سرکاری ملازمین وقت پر نہیں پہنچ سکتے۔ ڈی پی او سوات سید اشفاق کا کہنا ہے کہ ٹریفک مسائل کی اہم وجہ تجاوزات بھی ہیں، ٹوٹل 12 فٹ کاروڈ ہے، انکروچمنٹ سے مجموعی روڈ 6 فٹ کا رہ جاتا ہے۔انہوں نےکہا کہ جب ہم شہری انتظامیہ کو کہتے ہیں تو اسےحل کرنے میں انہیں مسائل نظرآتے ہیں،ہم نے درخواست کی ہے کہ انکروچمنٹ کو ہٹانے میں پولیس آپ کی مدد کریگی۔سوات میں ٹریفک کے مسائل سے جہاں عام شہریوں کو مشکلات سامنا ہے وہی ایمبولینس کواسپتال بچوں کوا سکول جبکہ سرکاری ملازمین کو بروقت دفاتر پہنچنے میں مشکلات کا سامنا رہتا ہے۔بشکریہ جنگbody {direction:rtl;} a {display:none;}