سعودی اتحاد بلیک لسٹ: ’اقوام متحدہ کی رپورٹ گمراہ کن ہے‘

سعودی اتحاد بلیک لسٹ: ’اقوام متحدہ کی رپورٹ گمراہ کن ہے‘

October 07, 2017 - 18:02
Posted in:

سعودی عرب نے اقوام متحدہ کی اس رپورٹ کو مسترد کر دیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ یمن میں جاری سعودی اتحاد کی فوجی کارروائیوں میں گذشتہ سال کم از کم 700 بچے ہلاک یا زخمی ہوئے ہیں۔اس رپورٹ کے بعد جمعے کو اقوام متحدہ نے یمن میں فوجی کارروائی کرنے والے سعودی اتحاد کو بلیک لسٹ کر دیا تھا۔ سعودی اتحادی افواج ’بچوں کو ہلاک کرنے کی فہرست میں شامل‘ جنگی جرائم کے ماہرین کو یمن بھیجنے پر اتفاقبلیک لسٹ کیے جانے کے بعد جنیوا میں سعودی عرب کے سفیر عبداللہ المعلمی نے پریس کانفرنس میں اس رپورٹ کو غلط اور گمراہ کن قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا 'سعودی اتحاد ہر ممکن کوشش کرتا ہے کہ شہریوں کو فوجی کارروائی میں نقصان نہ پہنچے‘۔اقوام متحدہ کی رپورٹاس سے قبل اقوام متحدہ نے یہ کہہ کر کے سعودی اتحاد کو بلیک لسٹ کر دیا تھا کہ اس کی فوجی کارروائی میں یمن میں کم از کم 700 بچے ہلاک یا زخمی ہوئے ہیں۔تازہ رپورٹ کے بعد انسانی حقوق کی تنظیموں نے مطالبہ کیا ہے کہ ریاض پر دباؤ ڈالا جائے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے '2016 میں سعودی اتحاد کی کارروائیوں میں 683 بچے ہلاک ہوئے اور مصدقہ اطلاعات کے مطابق اتحاد نے 38 سکولوں اور ہسپتالوں پر حملے کیے۔'اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے بلیک لسٹ ممالک اور تنظیموں کی فہرست کے شائع ہونے سے قبل سعودی عرب کے شاہ سلمان سے فون پر بات کی۔ اقوام متحدہ نے کئی ماہ قبل اس فہرست کو سعودی عرب کے ساتھ شیئر کیا تاکہ گذشتہ سال کی طرح کشیدگی نہ ہو۔اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ اس بلیک لسٹ کا مقصد صرف بچوں کی مشکلات کو اجاگر کرنا نہیں ہے بلکہ تصادم والے علاقوں میں بچوں کو پہنچنے والے نقصان کو کم کرنا بھی ہے۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}