ذاتی اشتہاری مہم چلانے پر چیف سیکرٹری سندھ اورکے پی کو نوٹس

ذاتی اشتہاری مہم چلانے پر چیف سیکرٹری سندھ اورکے پی کو نوٹس

October 02, 2018 - 14:05
Posted in:

الیکشن کے دوران ذاتی اشتہاری مہم چلانے پر سپریم کورٹ نے چیف سیکرٹری سندھ اورکے پی کو نوٹس جاری کرتے ہوئےدس روز میں جواب طلب کر لیا۔سرکاری اشتہارات سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی ۔ چیف جسٹس نے کہا شہبازشریف نے اپنی اشتہاری مہم کے عوض 55لاکھ کا چیک عدالت میں جمع کروا دیا،یہ بتائیں شہبازشریف کا یہ چیک ڈیم فنڈ میں جائے گا یا حکومتی خزانے میں ، اس پر ایڈووکیٹ شاہد حامد نے جواب دیا کہ یہ چیک پنجاب حکومت کے خزانے میں جائے گا،ڈیم کیلئے ن لیگ حکومت کی جانب سے 122ارب مختص کیے گئے تھے۔ چیف جسٹس نے کہا وہ رقم تو قومی خزانے سے دی گئی تھی ذاتی حیثیت میں نہیں۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا شاہد حامد اینڈ کمپنی کی جانب سے ڈیم فنڈ میں کوئی چندا نہیں آیا؟چیف جسٹس نے کہا ہمیں دوران سماعت بتایا گیا ہے کہ سندھ اورکے پی میں بھی اشتہاری مہم میں سرکاری خرچے پر ذاتی مہم چلائی گئی ،چیف سیکریٹری سندھ اورکے پی دس روز میں وضاحت دیں ۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ شہبازشریف نے رضاکارانہ طور پر چیک جمع کروا کر مثال قائم کردی،باقی لیڈر بھی اس پر عمل کریں،ان تاریخی کلمات کے ساتھ شہبازشریف کیخلاف نوٹس نمٹایا جاتا ہے۔بشکریہ جنگbody {direction:rtl;} a {display:none;}