خیبر پختونخواہ میں مال غنیمت کو لوٹ مار لکھنے پر درسی کتب واپس لینے کا حکم،حکومت کس ایجنڈے پر کام کررہی ہے،پشاور ہائیکورٹ

خیبر پختونخواہ میں مال غنیمت کو لوٹ مار لکھنے پر درسی کتب واپس لینے کا حکم،حکومت کس ایجنڈے پر کام کررہی ہے،پشاور ہائیکورٹ

June 27, 2019 - 22:37
Posted in:

پشاور (اے پی پی/آن لائن)خیبر پختونخوا میں مالِ غنیمت کو لوٹ مار لکھنے پر درسی کتب واپس لینے کا حکم۔حکومت کس ایجنڈے پر کام کررہی ہے۔پشاور ہائیکورٹ۔تفصیلات کے مطابقپشاور ہائیکورٹ نے جما عت نہم کے اسلامیات میںٹیکسٹ بک بورڈ کی جانب سے مال غنیمت کو لوٹ مار لکھنے کیخلاف محکمہ تعلیم سے وضاحت طلب کرلی۔ پشاور ہائیکورٹ میں نویں جماعت کے اسلامیات مضمون میں ٹیکسٹ بک بورڈ کی جانب سے مال غنیمت کو لوٹ مار لکھنے کیخلاف رٹ کی سماعت ہوئی ۔سماعت کے دوران عدالت کو بتا یا گیا کہ کلاس نہم کے مضمون اسلامیات میں غلط ترجمہ کرکے مال غنیمت کو لوٹ مار لکھا گیا ہے۔ اس موقع پر جسٹس قیصر الرشید نے سیکرٹری سے استفسار کیا کہ یہ آپ بچوں کو کیا تعلیم دے رہے ہیں۔قرآن کا کس طرح ترجمہ کیا ہے۔ یہ ٹرمپ کا ترجمہ ہو سکتا ہے کسی عالم دین کا نہیں۔اگر یہ نیشنل نصاب کے برابر ہے تو بہت افسوس ہے اور اس کے باوجود کہتے ہیں کہ نیشنل نصاب کے مطابق کتاب بنائی گئی ہے۔غلط ترجمہ کرکے بڑا جرم کیا ہے۔جسٹس قیصر رشید نے سیکرٹری تعلیم سے کہا کہ آپ لوگ نئی نسل کو تباہ اور ذہنوں کو آلودہ کررہے ہیں۔ آپ کس کے ایجنڈے پر کام کررہے ہیں۔کیوں نہ آپ کیخلاف ابھی اسی وقت ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دیں ۔ سیکرٹری و ثانوی تعلیم اور ممبر ٹیکسٹ بک بورڈ خیبر پختونخوا بھی سماعت کے دوران عدالت میں پیش ہوئے۔عدالت نے مذکورہ کتابوں میں قرآنی آیات کا ترجمہ فوری طور پر درست کرنے اور طلبا کے پاس پہلے سے موجود ان کتابوں کو واپس لینے کا حکم جاری کردیا۔اور غلط ترجمہ والی اسلامیات کی مزید کتابوں کو شائع نہ کرنے کے احکامات جاری کر دیے اور سماعت 10جولائی تک ملتوی کرتے ہوئے وفاقی سیکرٹری تعلیم کو بھی طلب کرلیا۔
بشکریہ جسارتbody {direction:rtl;} a {display:none;}