انڈیا میں بغیر انجن کی ایک ٹرین میلوں تک چلتی رہی

انڈیا میں بغیر انجن کی ایک ٹرین میلوں تک چلتی رہی

April 09, 2018 - 13:20
Posted in:

انڈیا کی مشرقی ریاست اڑیسہ میں 22 بوگیوں پر مشتمل ایک بغیر انجن والی ٹرین 11 کلو میٹر تک ٹریک پر واپس چلتی رہی۔ اس ٹرین پر تقریباً ایک ہزار مسافر سوار تھے اور وہ ٹرین اس وقت رکی جب ریلویز کے عملے نے پٹڑیوں پر پتھر رکھ کر رکاوٹ پیدا کیں۔ اس واقعے میں کسی بھی شخص کے زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ہے۔حکام نے بتایا ہے کہ اس غلطی پر انڈین ریلویز نے اپنے سات ملازمین کو برطرف کر دیا ہے۔خیال رہے کہ انڈیا میں ریلوے کا بڑا نیٹ ورک ہے اور تقریباً نو ہزار ٹرینوں پر روزانہ سوا دو کروڑ افراد سفر کرتے ہیں۔یہ بھی پڑھیے٭ اترپردیش: ٹرین کی بوگیاں الٹنے سے 23 افراد ہلاک٭ انڈیا: مسافر ٹرین کے حادثے میں ہلاکتوں کی تعداد 142 ہو گئی موبائل فون پر تیار اس واقعے کی ایک ویڈیو میں لوگوں کو اس وقت چیختے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے جب ٹرین ایک پلیٹ فارم سے گزرتی ہے۔محکمۂ ریل کے ایک ترجمان جے پی مشرا نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ معطل کیے جانے ملازمین نے پروٹوکول کی تکمیل نہیں کی اور اس بارے میں تحقیقات کا حکم دے دیا گيا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ جب کوئی گاڑی انجن سے علیحدہ کی جاتی ہے تو اس میں بریک لگائے جاتے ہیں اور اس معاملے میں اس میں غلطی ہوئی ہے یا پھر بھول سے بریک نہیں لگائے جا سکے۔جے پی مشرا نے کہا: 'ایسی صورت میں کوئی بڑا سانحہ ہو سکتا تھا لیکن مستعد سٹاف کی کوششوں سے کوئی حادثہ رونما ہونے سے بچ گیا۔‘خیال رہے کہ انڈیا میں ایسے واقعات غیرمعمولی نہیں ہیں۔ ہر چند کے ریلوے سے لاکھوں افراد روزانہ سفر کرتے ہیں تاہم اس کے بہت سے پرزے اور مشینیں پرانی ہیں۔گذشتہ سال نومبر میں ہندوستانی کسانوں کا ایک گروپ جب صبح کو بیدار ہوا تو معلوم چلا کہ ان کی ٹرین غلط سمت میں 160 کلو میٹر تک نکل گئی تھی۔اس سے قبل اگست کے مہینے میں شمالی ریاست اترپردیش میں ایک ٹرین پٹڑی سے اتر گئی جس کے نتیجے میں کم از کم 23 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}