آسٹریلیا: بنا فردِ جرم 14 دن تک حراست میں رکھنے کا منصوبہ

آسٹریلیا: بنا فردِ جرم 14 دن تک حراست میں رکھنے کا منصوبہ

October 04, 2017 - 11:39
Posted in:

آسٹریلیا میں حکومت کے ایک نئے مجوزہ قانون کے تحت دہشت گردی کے مشتبہ ملزمان کو 14 دن تک بغیر کسی فردِ جرم عائد کیے حراست میں رکھا جا سکے گا۔ وزیرِ اعظم میلکم ٹرن بل نے کہا کہ یہ مجوزہ قانون ریاستی قوانین کو تبدیل کر دے گا، جن میں حراست میں لیے جانے کے مختلف دورانیے ہیں۔ حکومت دہشت گردی سے متعلق 'ہدایات' کو اپنی تحویل میں رکھنے کو بھی غیرقانونی قرار دینا چاہتی ہے، مثال کے طور پر بم بنانے کی ہدایات۔ٹرن بل اس ہفتے منعقد ہونے والے قومی سلامتی کے اجلاس کے دوران ریاستی رہنماؤں سے اس معاملے پر حمایت حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔ ٹرن بل نے بدھ کو آسٹریلین براڈکاسٹنگ کورپ کو بتایا کہ اس نئے قانون کا مقصد 'کسی ملزم کو 14 دن تک حراست میں رکھنا ہے۔ قومی سلامتی کے لیے پکڑو اور بھول جاؤ کی گنجائش نہیں ہے۔'ٹرن بل نے کہا کہ پولیس کو کسی ملزم کو 14 روز تک حراست میں رکھنے کے لیے جج کی منظوری درکار ہو گی۔ انھوں نے کہا کہ دہشت گرد بننے کے لیے کارآمد مواد کو اپنے قبضے میں رکھنا بھی جرم قرار دیا جائے گا جس سے آسٹریلیا بھی اس قانون کے حامل قوانین والے ملکوں کی فہرست میں شامل ہو جائے گا۔ برطانیہ میں پہلے سے ایسا قانون موجود ہے۔اس کے علاوہ دہشت گردی کی جھوٹ موٹ افواہ پھیلانے والوں کے خلاف بھی ملک بھر میں یکساں قوانین وضع کیے جائیں گے، اور یہ بھی کہ آیا ڈرائیونگ لائنسوں کو ملک گیر ڈیٹا بیس میں شامل کر دیا جائے۔ آسٹریلین پولیس نے حالیہ برسوں میں دہشت گردی کے کئی منصوبے ناکام بنائے ہیں، جن میں ایک جہاز گرانے کا منصوبہ بھی شامل تھا۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}