’کشمیر کا مسئلہ حل کرو مجھے پاکستان جانا ہے‘

’کشمیر کا مسئلہ حل کرو مجھے پاکستان جانا ہے‘

November 12, 2017 - 20:50
Posted in:

انڈین اداکار رشی کپور سوشل میڈیا میں کافی 'ان' رہتے ہیں۔ خاص طور پر اپنے ٹویٹس کی وجہ سے انھیں اکثر تنقید کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ کبھی یہ تنقید ان پر پاکستانی کرتے ہیں اور کبھی خود ہم وطن انھیں آڑے ہاتھوں لے لیتے ہیں۔ اس بار انھوں پاکستان کے زیر انتظام اور انڈیا کے زیر انتظام کشمیر کی ملکیت پر ایک ٹویٹ کی جسے 19گھنٹوں کے دوران ساڑھے چھ ہزار لوگوں نے پسند کیا، 12 سو نے ری ٹویٹ کیا اور 27 سو افراد اس پر کمنٹ کر کے بحث میں شامل ہوگئے۔رشی کپور نے اپنے ٹویٹ کا آغاز ’سلام‘ سے کیا اور اختتام ’جئے ماتا دی‘ سے۔انھوں نے ٹویٹ میں لکھا تھا کہ 'فاروق عبداللہ جی سلام، میں آپ سے بالکل متفق ہوں۔ جموں اور کشمیر ہمارا، اور پاکستان کے زیر قبضہ کشمیر ان کا ہے۔ یہی واحد طریقہ ہے اپنے مسئلے کو حل کرنے کا۔ اسے تسلیم کرلیں، میں 65 برس کا ہوگیا ہوں اور میں مرنے سے قبل پاکستان دیکھنا چاہتا ہوں۔ میں چاہتا ہوں کہ میرے بچے اپنے آبائی علاقے کو دیکھیں۔ بس کروا دیجیئے۔ جئے ماتا دی!'یہ بھی پڑھیےرشی کپور کے ’کھلم کھلا‘ اعتراف'راج کپور کی تمام فلموں کے کاسٹیوم خاکستر'کمنٹ کرنے والوں میں اکثریت نے ان پر تنقید کی اور رشی کپور کو مزید 'پیگ' لگا کر سو جانے کا مشووہ دیا۔ انڈیا اور پاکستان سے چند افراد نے اس بات پر اتفاق کیا پاکستان اور انڈیا کے زیرِ انتظام کشمیری علاقوں میں امن قائم ہونا چاہیے۔

@alokg2k

@alokg2k

آلوک گپتا نے رشی کپور کی ٹویٹ کو زیادہ سنجیدگی سے لے لیا اور ٹویٹ کی 'آپ کا فین تھا لیکن آپ کے خیالات دیکھ کر دکھ ہوا۔ آپ کو ان فولو کر رہا ہوں اور کبھی آپ کی فلم نہیں دیکھوں گا۔ ویسے سوچیں کہ اگر آپ کی املاک پر کوئی قبضہ کر لے تو کیا آپ اسے چھوڑ دیں گے یا اس کے حصول کے لیے لڑیں گے؟'ایسا لگتا ہے کہ پاکستان کی طرح انڈیا میں بھی ماہرہ خان اور رشی کپور کے صاحبزادے رنبیر کپور کی تصاویر کو بھلایا نہیں جا سکا ہے اور اس پر اب بھی بات ہو رہی ہے۔ رشی کپور کے ٹویٹ پر کئی انڈین شہریوں نے مختلف انداز سے ماہرہ خان اور رنبیر کپور کا ذکر کیا اور رشی کپور کے پاکستان جانے کی خواہش کو اپنی اپنی سمجھ کے مطابق معانی پہنانے کی کوشش کی۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}