’نظریۂ ارتقا کے مخالف اور چلبلی لڑکیوں کا ذاتی حرم‘

’نظریۂ ارتقا کے مخالف اور چلبلی لڑکیوں کا ذاتی حرم‘

July 12, 2018 - 11:44
Posted in:

عدنان اکتار ترکی کے ایک اسلامی فرقے کے رہنما اور ٹی وی پر تبلیغ کرنے والی شخصیت جنھیں 235 پیروکاروں سمیت مختلف الزامات میں گرفتار کیا گیا ہے۔ عدنان اکتار پر جرائم پیشہ گینگ قائم کرنے، دھوکہ دہی اور جنسی استحصال کے الزامات ہیں۔ترکی کی نیوز ایجنسی اناطولو کے مطابق پولیس نے پانچ مختلف صوبوں میں کئی جائیدادوں پر کارروائی کی ہے تاکہ مالی جرائم کے حوالے سے شواہد حاصل کیے جا سکیں۔خیال کیا جا رہا ہے کہ گرفتاریاں ان ہی مقامات پر کی گئی ہیں جبکہ عدنان اکتار کو استنبول میں واقع ان کے مکان سے گرفتار کیا گیا۔

بعض ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر کوئی خاتون’ بہن‘ نہیں بنتی تو اس کو ’موٹر‘ قرار دے دیا جاتا ہے اور اس کا مطلب ہوتا ہے کہ وہ متعدد ساتھ سیکس کرتی ہے اور مرد ارکان کو اجازت ہوتی ہے وہ ’ موٹر‘ سے سیکس کر سکتے ہیں۔ ماضی میں عدنان ان الزامات کو مسترد کر چکے ہیں اور اپنے ذات پر ان حملوں کو برطانوی خفیہ سروسز کی نگرانی میں ہونے والی بین الاقوامی سازش قرار دے چکے ہیں۔ اسرائیل کے دوستماضی میں یہود مخالف رائے اور تنقید کے برعکس عدنان اکتار کے حالیہ برسوں میں اسرائیل کے ساتھ قریبی تعلقات رہے ہیں۔ عدنان اور ان کی تنظیم کے متعدد ارکان کئی بار مختلف مواقع پر اسرائیل جا چکے ہیں اور وہاں ان کی اعلیٰ مذہبی اور سیاسی شخصیات سے ملاقات ہو چکی ہیں جبکہ بعض سینیئر اسرائیلی حکام عدنان سے ملنے ترکی بھی آ چکے ہیں۔ایک برس پہلے عدنان کی سربراہی میں ایک وفد نے اسرائیلی پارلیمان کا دورہ کیا تھا جہاں اعلیٰ حکام سے ملاقات کا موقع ملا اور اسرائیلی وزیراعظم بنیامن نتن یاہو سے خصوصی طور پر تعارف کرایا گیا تھا۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}