’جسے پکڑنا ہوتا ہے اسےچھوڑدیا جاتا ہے‘

’جسے پکڑنا ہوتا ہے اسےچھوڑدیا جاتا ہے‘

August 10, 2018 - 13:05
Posted in:

چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے این آئی سی ایل کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ جسے پکڑنا ہوتا ہے اسے چھوڑ دیا جاتا ہے۔سپریم کورٹ میں این آئی سی ایل کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے کہا کہ جو پاکستان میں ہوتا ہے اسے گرفتار کر لیا جاتا ہے، مجھے معلوم ہے کیسے سیاسی طور پر لوگوں کو باہر بھیج دیا جاتا ہے۔کیس کی سماعت کےدوران چیف جسٹس نے نیب کو سابق چیئرمین ایاز خان نیازی کی گرفتاری سے روکنے کا حکم دیتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ جسے پکڑنا تھا وہ تو ملک سے باہر بھاگ گیا ہے۔جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ دوران تحقیقات نیب لوگوں کو کیوں اٹھا کر لے جاتی ہے ؟ انہوں نےریمارکس دیئے کہ جو شخص آپ کی قید میں آجاتا ہےاسے نیب  رگڑ دیتی ہے۔بشکریہ جنگbody {direction:rtl;} a {display:none;}