کشمیر پر بھارتی قبضے کے خلاف دنیا بھر میں یوم سیاہ‘ وادی میں مکمل ہڑتال‘ اقوام متحدہ مسئلہ حل کرائے‘ پاکستان

کشمیر پر بھارتی قبضے کے خلاف دنیا بھر میں یوم سیاہ‘ وادی میں مکمل ہڑتال‘ اقوام متحدہ مسئلہ حل کرائے‘ پاکستان

October 27, 2017 - 23:56
Posted in:

سری نگر/مظفر آباد/اسلام آباد/برلن/گلاسکو (خبر ایجنسیاں+نمائندہ خصوصی)کشمیر پر بھارت کے غاصبانہ قبضے کے خلاف کشمیریوں نے دنیا بھرمیں یوم سیاہ منا یا۔جموں وکشمیر پر بھارت کے غیر قانونی تسلط کے خلاف مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال رہی۔ بھارت مخالف ریلیاں روکنے کے لیے مقبوضہ وادی میں فوج اور پولیس کی بھاری نفری تعینات رہی ۔ قابض انتظامیہ نے میر واعظ عمرفاروق، سید علی گیلانی، یٰسین ملک سمیت پوری حریت قیادت کو گھروں میں نظر بند کردیا اور انہیں نماز جمعہ میں بھی شرکت کرنے کی اجازت نہیں دی گئی ۔ تفصیلات کے مطابق امریکا اور برطانیہ سمیت دنیا بھر میں مقیم کشمیریوں نے اپنی سرزمین پر بھارتی قبضے کے خلاف یوم سیاہ منا یا۔ اس سلسلے میں ریلیاں، جلسے جلوس اور احتجاج کیا گیا ۔ اس موقع پرحکومت پاکستان نے اقوام متحدہ اور عالمی برادری پر زور دیا ہے کہ وہ خطے میں امن کے لیے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم روکیں اور فوری طور پر مسئلہ کشمیر حل کیا جائے ، اس سلسلے میں سینیٹ اور قومی اسمبلی میں متعدد قرار دادیں بھی پاس کی جاچکی ہیں۔یو م سیاہ کے موقع پر اپنے پیغام میں اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے کہاہے کہ کشمیر ی عوام کی تحریک حق خودارادیت کو بندوق کے زور پر نہیں دبایا جاسکتا ، مسئلہ کشمیر ایک فلیش پوائنٹ ہے جو نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا کے امن کے لیے ایک مستقل خطرہ ہے، عالمی برادری کو اس مسئلے کے فوری حل کے لیے اپنا کلیدی کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ ڈپٹی اسپیکرمرتضیٰ جاویدعباسی نے اپنے پیغام میں کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی کی ایک طویل تاریخ ہے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مقبوضہ وادی ایک متنازع علاقہ ہے جس میں استصواب رائے ہونا باقی ہے ۔

google_ad_client = "ca-pub-6828776300899524";
google_ad_slot = "0592552376";
google_ad_width = 336;
google_ad_height = 280;

کل جماعتی حریت کانفرنس آزاد جموں و کشمیر شاخ نے اسلام آباد میں بھارتی ہائی کمیشن کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا احتجاجی مظاہرے کی قیادت کل جماعتی حریت کانفرنس کے کنوینئر غلام محمد صفی نے کی مظاہرے میں حریت رہنما فیض نقشبندی، الطاف بٹ، پرویز ایڈووکیٹ، منظور بٹ، شیخ عبدالمتین و دیگر نے شرکت کی۔ حریت رہنما غلام محمد صفی نے اقوام متحدہ پر زور دیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر سے بھارتی فوجیوں کو نکلنے پر مجبور کریں۔ کشمیر میں نافذ تمام کالے قوانین کو ختم کرائیں اور تمام بے گناہ قیدیوں کو رہا کرانے میں اپنا کردار ادا کریں۔جماعۃالدعوۃ پاکستان کی اپیل پرمقبوضہ کشمیرپر بھارتی قبضہ کے 70 سال مکمل ہونے پر ملک گیر احتجاج کیا گیا۔لاہور،کراچی، مظفر آباد، حیدر آباد اور دیگر شہروں میں احتجاجی مظاہروں، جلسوں، کانفرنسوں اور ریلیوں کا انعقاد کیا گیاجن میں طلبہ، وکلا، تاجروں، سول سوسائٹی اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ نماز جمعہ کے اجتماعات کے بعد ہزاروں افراد سڑکوں پر نکل آئے اور مقبوضہ کشمیر پر بھارتی قبضے اور نہتے کشمیریوں کی قتل و غارت گری کیخلاف شدید احتجاج کیا گیا۔ مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے بھارت کے خلاف زبردست نعرے بازی کی گئی اور بھارتی ترنگے بھی نذر آتش کیے گئے۔علما کرام نے خطبات جمعہ میں مذمتی قراردادیں بھی پاس کیں۔جموں وکشمیر لبریشن سیل کے زیر اہتمام کشمیر پر بھارتی قبضے کے خلاف یوم سیاہ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم آزاد حکومت ریاست جموں و کشمیر راجا فاروق حیدر نے کہا ہے کہ بھارت حریت قیادت اور کشمیریوں سے مذاکرات سے پہلے کشمیر کی متنازع حیثیت کو تسلیم کرے اور مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کے ذریعے کشمیریوں کے قتل عام، انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور کالے قوانین کا خاتمہ کرے۔

google_ad_client = "ca-pub-6828776300899524";
google_ad_slot = "0592552376";
google_ad_width = 336;
google_ad_height = 280;

وفاقی وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان چودھری برجیس طاہر نے کہا کہ جدوجہد آزادی میں کشمیر ی تنہا نہیں ہیں۔پوری پاکستانی قوم کشمیریوں کے ساتھ ہے ۔پاکستان کشمیریوں کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا ،کشمیر کے بغیر پاکستان نا مکمل ہے ۔اسلام آباد ماڈل کالج برائے طالبات نے کشمیر کے یوم سیاہ کے حوالے سے خصوصی تقریب کااہتمام کیا جس میں کالج کی طالبات اساتذہ سمیت دیگر مہمانوں نے شرکت کی۔ کالج کی طالبات نے کشمیری عوام کے ساتھ یکجہتی کے اظہار کے لیے مختلف ٹیبلو ز اور تقاریر پیش کیں ۔ تقریب کی مہمان خصوصی مشال ملک نے کالج کے اساتذہ اور طالبات کے جذبے کو خراج تحسین پیش کیا ۔ سول ڈیفنس ملاکنڈ کی طرف سے بٹ خیلہ میں یوم سیاہ منایا گیا ، جس میں ڈگری کالج کے طلبہ ، اساتذہ ، تاجربرادری ، سیاسی جماعتوں اور سماجی کارکنوں نے بھرپور تعداد میں شرکت کی اور کشمیر پر بھارت کے ظالمانہ قبضے کی شدید الفاظ میں مذمت کرکے ظفرپارک سے بس ا سٹینڈ تک احتجاجی ریلی نکالی گئی۔پاکستان سویٹ ہوم میں بھی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے یوم سیاہ منایا گیا۔ پاکستان سویٹ ہوم کے سرپرست اعلیٰ زمرد خان نے اس موقع پر کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے مسئلے کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کیا جائے، مقبوضہ کشمیرکے لوگوں کو ان کی رائے کے مطابق آزادی ملنی چاہیے ،استصوابِ را ئے ان کا بنیادی اور جمہوری حق ہے۔امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ خطے میں بھارتی بالادستی کا امریکی خواب پورا نہیں ہو گا ۔بھارت افغانستان میں امن واستحکام لیے نہیں بلکہ وہ پاکستان کے خلاف تخریب کاری کے لیے اڈا چاہتا ہے ۔

google_ad_client = "ca-pub-6828776300899524";
google_ad_slot = "0592552376";
google_ad_width = 336;
google_ad_height = 280;

متحدہ جہاد کونسل کے سیکرٹری جنرل اور تحریک المجاہدین کے امیر شیخ جمیل الرحمن نے کہا ہے کہ بھارت آزادی پسند قیادت کی کردار کشی اور حریت پسندوں کو خوفزدہ کر کے تحریک آزادی کو ختم نہیں کر سکتا۔ تحریک کشمیر برطانیہ اسکاٹ لینڈ اور اسکاٹش ہیومین رائٹس کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہر ہ ہوا جس کی قیادت کنوینئر کل جماعتی کشمیر رابطہ کونسل ممبر قانون ساز اسمبلی و سابق امیر جماعت اسلامی عبدالرشید ترابی نے کی ، مظاہرے میں ا سکاٹش ممبران پارلیمنٹ نے شرکت کی اور کشمیریوں کے حق میں نعرے لگائے ،مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے عبدالرشید ترابی نے کہا کہ دیوار برلن ٹوٹ سکتی ہے تو کشمیر ی عوام بھی ایک ہوسکتے ہیں۔ 70سال گزرنے کے باوجود وہ حق ابھی تک کشمیریوں کو حق نہیں دیا گیا اور کشمیری اپنے حق کے لیے جدوجہد کررہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ جس طرح اسکاٹ لینڈمیں ریفرنڈم کرایا گیا اسی طرح کشمیریوں کو بھی ریفرنڈم کے ذریعے حق دیا جائے تا کہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کریں ۔ مظاہرے سے تحریک کشمیر برطانیہ کے سرپرست اعلیٰ سید طفیل حسین شاہ ، تحریک کشمیر برطانیہ کے صدر راجا فہیم کیانی،ا سکاٹ لینڈ کے صدر کونسلر حنیف راجا ،ڈاکٹر گل اور دیگر کمیونٹی لیڈروں نے بھی خطاب کیا۔برلن گیٹ دیوار برلن پریوم سیاہ کے مناسبت سے کشمیر کیمونٹی کی جانب سے ملین مارچ سے خطاب کرتے ہوئے آزاد جموں وکشمیر کے سابق وزیراعظم بیرسٹر سلطان محمود نے کہا کہ اگلے سال کشمیر کے دونوں طرف لانگ مارچ کرتے ہوئے کنٹرول لائن کو دیوار برلن کی طرح سبوتاژ کرد یں گے بھارت نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل قراداد کو اپنے پاوں تلے روندا ہے ،ہم اپنی خودمختاری و تحریک آزادی کو آخری حد تک لے کر جائیں گے۔ اس موقع پر تحریک کشمیر برطانیہ کے فہیم کیانی، یورپ بھر سے آئے ہوئے کشمیر کمیونٹی کے دیگر رہنماؤں میں پیرس کشمیر کیمونٹی کے رہنما کو کوآرڈینیٹر فار یورپ زاہد ہاشمی نے بھی خطاب کیا۔ واضح رہے کہ 1947 میں تقسیم برصغیر کے وقت کشمیری عوام نے مسلم اکثریتی ریاست ہونے کے باعث پاکستان سے الحاق کا فیصلہ کیا تھا لیکن بھارت نے مقبوضہ کشمیر پر ناجائز قبضہ کرلیا ۔ 27 اکتوبر 1947 کو بھارتی فوج جموں و کشمیر میں داخل ہوگئی اور بڑے پیمانے پر کشمیری مسلمانوں کا قتل عام کیا۔پاکستانی سرحدی قبائل نے بھارتی قبضے کے خلاف اعلان جنگ کردیا اور نہتے کشمیریوں کی مدد کے لیے بڑی تعداد میں ہتھیار اٹھا کر کشمیر میں داخل ہوگئے۔ بہادر قبائل نے شدید جنگ کے بعد ایک وسیع علاقے سے بھارتی فوج کو مار بھگایا جو آج آزاد کشمیر کے نام سے جانا جاتا ہے۔ نہتے کشمیریوں پر مظالم ڈھانے والا بزدل بھارت جب پاکستان کے بہادر اور غیور قبائل کا مقابلہ نہ کرسکا تو فوراً اس مسئلے کو اقوام متحدہ میں لے گیا۔ عالمی برادری اور اقوام متحدہ نے قرار دیا کہ کشمیر میں ریفرنڈم کرایا جائے اور انہیں اس بات کا فیصلہ کرنے کا اختیار دیا جائے کہ وہ پاکستان یا بھارت میں جس کے ساتھ چاہیں الحاق کرلیں۔
بشکریہ جسارتbody {direction:rtl;} a {display:none;}