چاکلیٹ کے جھانسے میں بچی کے منہ میں سلگتا ہوا پٹاخہ

چاکلیٹ کے جھانسے میں بچی کے منہ میں سلگتا ہوا پٹاخہ

November 08, 2018 - 20:25
Posted in:

کیا کوئی منہ میں رکھ کر پٹاخہ جلانے کی سوچ سکتا ہے؟ وہ بھی ایک معصوم سی بچی کو چاکلیٹ کا جھانسا دے کر؟ عموماً تو بڑے بچوں کو پٹاخوں سے دور رہنے کا مشورہ دیا جاتا ہے لیکن انڈیا کے ضلعے میرٹھ کے سردھنا علاقے کے ملک گاؤں میں ایک ایسا معاملہ سامنے آیا ہے جس پر یقین کرنا مشکل ہے۔ یہاں ایک ادھیڑ عمر کے شخص نے ایک بچی کو چاکلیٹ کا جھانسا دے کر اس کے منہ میں سلگتا ہوا پٹاخہ رکھ دیا۔ پٹاخہ سلگ رہا تھا اور منہ میں رکھنے کے کچھ دیر بعد ہی پھٹ گیا۔

کچھ ہی دیر میں حادثے کی اطلاع پورے گاؤں میں پھیل گئی اور درجنوں کی تعداد میں لوگ وہاں پہنچ گئے۔ آرُشی کے والد شیشپال نے کہا ’میری بیٹی کچھ بول نہیں پا رہی۔ جب ہم نے اسے دیکھا تو اسکے منہ سے خون نکل رہا تھا۔ ہمیں کچھ بھی سمجھ نہیں آیا۔ ہرِیا نے ایسا کیوں کیا ہمیں نہیں پتہ۔ ہماری اس سے کوئی دشمنی بھی نہیں ہے۔ لیکن اتنا تو طے ہے کہ ہرِیا نے میری بیٹی کو جان سے مارنے کی کوشش کی ہے۔‘معصوم کے منہ میں چاکلیٹ کے بہانے پٹاخہ رکھنے کی بات کو سردھنا کے تھانہ دار مشکوک مان رہے ہیں۔ ایس او پرشانت کپِل کہتے ہیں، ’بچی کو پٹاخے سے چوٹ لگی ہے، یہ بات تو سچ ہے لیکن چاکلیٹ کے بہانے پٹاخہ اس کے منہ میں رکھا گیا اس بات کی تفتیش ہوگی۔ ملزم ہرِیا کے خلاف جان سے مارنے کی کوشش کے تحت رپورٹ درج کر لی گئی ہے۔ اس کی تلاش جاری ہے۔‘بچی کے منہ میں ہی چھوڑا گیا پٹاخہآرُشی زخمی حالت میں ایک ہسپتال میں داخل ہے۔ وہ نہ تو کچھ بول پا رہی ہے اور نہ ہی کھا پا رہی ہے۔ آرُشی کے منہ میں ہی پٹاخہ رکھ کر چھوڑا گیا، اس بات کی تصدیق ڈاکٹر سنیل تیاگی نے کی ہے۔ سُنیل تیاگی کہتے ہیں، ’جس طرح آرُشی کے منہ میں چوٹ آئی ہے اسے دیکھ کر یہی لگتا ہے کہ اس کے منہ میں ہی پٹاخہ رکھ کر چھوڑا گیا ہے۔ پٹاخے کے اندر کا مواد بھی شاید بچی کے اندر ہی ہے۔ اس کے منہ میں کئی ٹانکے لگانے پڑے ہیں۔ بچی پر ہر لمحہ نگاہ رکھی جا رہی ہے۔‘

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}