پوتن کے روس میں زندگی 10 چارٹس کی مدد سے

پوتن کے روس میں زندگی 10 چارٹس کی مدد سے

March 14, 2018 - 17:35
Posted in:

ویلادیمیر پوتن دو دہائیوں سے روسی سیاست پر غالب ہیں۔ دو دہائیوں میں بطور صدر اور وزیر اعظم انھوں نے معاشی ترقی، عسکری قوت میں اضافے اور روس کو دوبارہ ایک طاقت بنایا۔ زیادہ تر روسیوں کا معیار زندگی بہتر ہوا اور استحکام اور قومیت کے احساس ایک بار پھر ہوا۔ تاہم بہت سے لوگوں کا کہنا ہے کہ اس سب کی قیمت نوخیز جمہوریت کو نقصان ہے۔ اس عرصے میں عام روسیوں کے لیے زندگی میں کیا تبدیلیاں ہوئیں۔ 1. غربت میں کمیروس میں غربت میں خاطر خواہ کمی ہوئی ہے لیکن اب بھی دنیا کی دیگر بڑی معیشتوں کے مقابلے میں روس میں اب بھی غربت اوسط سے زیادہ ہے۔
@-webkit-keyframes spinnerRotate
{
from{-webkit-transform:rotate(0deg);}
to{-webkit-transform:rotate(360deg);}
}
@-moz-keyframes spinnerRotate
{
from{-moz-transform:rotate(0deg);}
to{-moz-transform:rotate(360deg);}
}
@-ms-keyframes spinnerRotate
{
from{-ms-transform:rotate(0deg);}
to{-ms-transform:rotate(360deg);}
}
.bbc-news-visual-journalism-loading-spinner {
display: block;
margin: 10px auto;
width: 33px;
height: 33px;
max-width: 33px;

-webkit-animation-name: spinnerRotate;
-webkit-animation-duration: 5s;
-webkit-animation-iteration-count: infinite;
-webkit-animation-timing-function: linear;
-moz-animation-name: spinnerRotate;
-moz-animation-duration: 5s;
-moz-animation-iteration-count: infinite;
-moz-animation-timing-function: linear;
-ms-animation-name: spinnerRotate;
-ms-animation-duration: 5s;
-ms-animation-iteration-count: infinite;
-ms-animation-timing-function: linear;

background-image: url('data:image/gif;base64,R0lGODlhIQAhALMAAMPDw/Dw8BAQECAgIICAgHBwcKCgoDAwMFBQULCwsGBgYEBAQODg4JCQkAAAAP///yH/C1hNUCBEYXRhWE1QPD94cGFja2V0IGJlZ2luPSLvu78iIGlkPSJXNU0wTXBDZWhpSHpyZVN6TlRjemtjOWQiPz4gPHg6eG1wbWV0YSB4bWxuczp4PSJhZG9iZTpuczptZXRhLyIgeDp4bXB0az0iQWRvYmUgWE1QIENvcmUgNS4zLWMwMTEgNjYuMTQ1NjYxLCAyMDEyLzAyLzA2LTE0OjU2OjI3ICAgICAgICAiPiA8cmRmOlJERiB4bWxuczpyZGY9Imh0dHA6Ly93d3cudzMub3JnLzE5OTkvMDIvMjItcmRmLXN5bnRheC1ucyMiPiA8cmRmOkRlc2NyaXB0aW9uIHJkZjphYm91dD0iIiB4bWxuczp4bXA9Imh0dHA6Ly9ucy5hZG9iZS5jb20veGFwLzEuMC8iIHhtbG5zOnhtcE1NPSJodHRwOi8vbnMuYWRvYmUuY29tL3hhcC8xLjAvbW0vIiB4bWxuczpzdFJlZj0iaHR0cDovL25zLmFkb2JlLmNvbS94YXAvMS4wL3NUeXBlL1Jlc291cmNlUmVmIyIgeG1wOkNyZWF0b3JUb29sPSJBZG9iZSBQaG90b3Nob3AgQ1M2IChNYWNpbnRvc2gpIiB4bXBNTTpJbnN0YW5jZUlEPSJ4bXAuaWlkOjFFOTcwNTgzMDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIiB4bXBNTTpEb2N1bWVudElEPSJ4bXAuZGlkOjFFOTcwNTg0MDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIj4gPHhtcE1NOkRlcml2ZWRGcm9tIHN0UmVmOmluc3RhbmNlSUQ9InhtcC5paWQ6MUU5NzA1ODEwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiIHN0UmVmOmRvY3VtZW50SUQ9InhtcC5kaWQ6MUU5NzA1ODIwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiLz4gPC9yZGY6RGVzY3JpcHRpb24+IDwvcmRmOlJERj4gPC94OnhtcG1ldGE+IDw/eHBhY2tldCBlbmQ9InIiPz4B//79/Pv6+fj39vX08/Lx8O/u7ezr6uno5+bl5OPi4eDf3t3c29rZ2NfW1dTT0tHQz87NzMvKycjHxsXEw8LBwL++vby7urm4t7a1tLOysbCvrq2sq6qpqKempaSjoqGgn56dnJuamZiXlpWUk5KRkI+OjYyLiomIh4aFhIOCgYB/fn18e3p5eHd2dXRzcnFwb25tbGtqaWhnZmVkY2JhYF9eXVxbWllYV1ZVVFNSUVBPTk1MS0pJSEdGRURDQkFAPz49PDs6OTg3NjU0MzIxMC8uLSwrKikoJyYlJCMiISAfHh0cGxoZGBcWFRQTEhEQDw4NDAsKCQgHBgUEAwIBAAAh+QQAAAAAACwAAAAAIQAhAAAE0vDJSScguOrNE3IgyI0bMIQoqUoF6q5jcLigsCzwJrtCAeSjDwoRAI4aLoNxxBCglEtJoFGUKFCEqCRxKkidoIP20aoVDaifFvB8XEGDseQEUjzoDq+87IijEnIPCSlpgWwhDIVyhyKKY4wOD3+BgyF3IXpjfHFvfYF4dmghalGQSgFgDmJaM2ZWWFEEKHYSTW1AojUMFEi3K7kgDRpCIUQkAcQgCDqtIT2kFgWpYVUaOzQ2NwvTIQfVHHw04iCZKibjNAPQMB7oDgiAixjzBOsbEQA7');
}

Click to see content: russianpoverty_urdu

2. لیکن اجرت میں اضافہ حالیہ عرصے میں رک گیا ہےصدر پوتن کے پہلے دورِ صدارت میں اجرت میں سالانہ 10 فیصد کے تناسب سے بڑھی۔ 2012 میں دوبارہ صدر منتخب ہونے کے بعد یکے بعد دیگرے بحرانوں اور معاشی پابندیوں کے باعث ترقی نہ ہو سکی۔

2011 اور 2014 کے درمیان اصل حاصل کردہ تنخواہ میں 11 فیصد اضافہ ہوا اور پوتن کی حکومت کے دوران کنزیومر اکانومی میں وسعت آئی ہے۔ 3. زیادہ لوگوں کے پاس گاڑیاں اور گھرانوں سے زیادہ مائیکرو ویوروس کی لاڈا کے ساتھ پرانی محبت جاری ہے۔ 2017 میں 15 لاکھ 95 ہزار فروخت ہونے والی نئی گاڑیوں میں سے تین لاکھ 11 ہزار لاڈا گاڑیاں تھیں۔ یورپین آٹو موبائل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے مطابق روس میں گاڑیاں رکھنے کا تناسب پولینڈ اور ہنگری کے برابر ہے لیکن ہمسایہ ملک فن لینڈ سے کم ہے جہاں یہ تناسب 76 ہے ہر 100 گھرانوں میں۔ 4. روسیوں کی آئیکیا سے محبتروس میں آئیکیا کا پہلا سٹور دارالحکومت ماسکو میں 2000 میں کھلا۔ اس سٹور کا شمار جلد ہی آئیکیا کے ان 10 سٹورز میں ہونے لگا جہاں فروخت بہت زیادہ تھی۔

آئیکیا کے اب روس میں سینٹ پیٹرز برگ سے لے کر نووسیبرگ تک 14 سٹورز ہیں جبکہ تین سٹور تو صرف روس کے آس پاس ہی ہیں۔ تاہم یہ سب بغیر کسی دقت کے نہیں تھا۔ آئیکیا نے اپنا آن لائن میگزین اس لیے بند کر دیا کہ اس سے پوتن کے ہم جنس پرستی کی تشہیر کے خلاف قانون کی خلاف ورزی نہ ہو جائے۔ آئیکیا کو انسداد بدعنوانی کے ضابطہ اخلاق کے اطلاق میں کافی مشکل پیش آئی ہے۔ 5. اور شیمپین۔۔۔اس بارے میں تنازع ہے کہ روسی کتنی شراب پیتے ہیں۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق شراب نوشی میں کمی واقع ہوئی ہے لیکن 80 فیصد کمی کا دعویٰ درست نہیں جو کہ وزیر صحت نے کیا تھا۔ ووڈکا پینے میں کمی کی وجہ مغربی بیئر میں اضافے اور وائن پینے میں اضافہ ہے۔ روس میں کبھی بیئر کو سافٹ ڈرنک سمجھا جاتا تھا لیکن چند امرا نے اپنے شراب بنانے کی فیکٹریاں کھول لی ہیں۔ 6. باقی ممالک کی طرح انٹرنیٹ کے استعمال میں اضافہورلڈ بینک کے تجزیے کے مطابق روس میں ’وی کے‘ نامی سوشل پلیٹ فارم ہے جس کے 90 ملین صارفین ہیں جبکہ فیس بک کے محض 20 ملین صارفین ہیں۔ سرچ انجن یانڈیکس دوسرے نمبر پر ہے۔ روسی زبان کے اس سرچ انجن کو زبان کی وجہ سے گوگل پر برتری حاصل ہے۔
@-webkit-keyframes spinnerRotate
{
from{-webkit-transform:rotate(0deg);}
to{-webkit-transform:rotate(360deg);}
}
@-moz-keyframes spinnerRotate
{
from{-moz-transform:rotate(0deg);}
to{-moz-transform:rotate(360deg);}
}
@-ms-keyframes spinnerRotate
{
from{-ms-transform:rotate(0deg);}
to{-ms-transform:rotate(360deg);}
}
.bbc-news-visual-journalism-loading-spinner {
display: block;
margin: 10px auto;
width: 33px;
height: 33px;
max-width: 33px;

-webkit-animation-name: spinnerRotate;
-webkit-animation-duration: 5s;
-webkit-animation-iteration-count: infinite;
-webkit-animation-timing-function: linear;
-moz-animation-name: spinnerRotate;
-moz-animation-duration: 5s;
-moz-animation-iteration-count: infinite;
-moz-animation-timing-function: linear;
-ms-animation-name: spinnerRotate;
-ms-animation-duration: 5s;
-ms-animation-iteration-count: infinite;
-ms-animation-timing-function: linear;

background-image: url('data:image/gif;base64,R0lGODlhIQAhALMAAMPDw/Dw8BAQECAgIICAgHBwcKCgoDAwMFBQULCwsGBgYEBAQODg4JCQkAAAAP///yH/C1hNUCBEYXRhWE1QPD94cGFja2V0IGJlZ2luPSLvu78iIGlkPSJXNU0wTXBDZWhpSHpyZVN6TlRjemtjOWQiPz4gPHg6eG1wbWV0YSB4bWxuczp4PSJhZG9iZTpuczptZXRhLyIgeDp4bXB0az0iQWRvYmUgWE1QIENvcmUgNS4zLWMwMTEgNjYuMTQ1NjYxLCAyMDEyLzAyLzA2LTE0OjU2OjI3ICAgICAgICAiPiA8cmRmOlJERiB4bWxuczpyZGY9Imh0dHA6Ly93d3cudzMub3JnLzE5OTkvMDIvMjItcmRmLXN5bnRheC1ucyMiPiA8cmRmOkRlc2NyaXB0aW9uIHJkZjphYm91dD0iIiB4bWxuczp4bXA9Imh0dHA6Ly9ucy5hZG9iZS5jb20veGFwLzEuMC8iIHhtbG5zOnhtcE1NPSJodHRwOi8vbnMuYWRvYmUuY29tL3hhcC8xLjAvbW0vIiB4bWxuczpzdFJlZj0iaHR0cDovL25zLmFkb2JlLmNvbS94YXAvMS4wL3NUeXBlL1Jlc291cmNlUmVmIyIgeG1wOkNyZWF0b3JUb29sPSJBZG9iZSBQaG90b3Nob3AgQ1M2IChNYWNpbnRvc2gpIiB4bXBNTTpJbnN0YW5jZUlEPSJ4bXAuaWlkOjFFOTcwNTgzMDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIiB4bXBNTTpEb2N1bWVudElEPSJ4bXAuZGlkOjFFOTcwNTg0MDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIj4gPHhtcE1NOkRlcml2ZWRGcm9tIHN0UmVmOmluc3RhbmNlSUQ9InhtcC5paWQ6MUU5NzA1ODEwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiIHN0UmVmOmRvY3VtZW50SUQ9InhtcC5kaWQ6MUU5NzA1ODIwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiLz4gPC9yZGY6RGVzY3JpcHRpb24+IDwvcmRmOlJERj4gPC94OnhtcG1ldGE+IDw/eHBhY2tldCBlbmQ9InIiPz4B//79/Pv6+fj39vX08/Lx8O/u7ezr6uno5+bl5OPi4eDf3t3c29rZ2NfW1dTT0tHQz87NzMvKycjHxsXEw8LBwL++vby7urm4t7a1tLOysbCvrq2sq6qpqKempaSjoqGgn56dnJuamZiXlpWUk5KRkI+OjYyLiomIh4aFhIOCgYB/fn18e3p5eHd2dXRzcnFwb25tbGtqaWhnZmVkY2JhYF9eXVxbWllYV1ZVVFNSUVBPTk1MS0pJSEdGRURDQkFAPz49PDs6OTg3NjU0MzIxMC8uLSwrKikoJyYlJCMiISAfHh0cGxoZGBcWFRQTEhEQDw4NDAsKCQgHBgUEAwIBAAAh+QQAAAAAACwAAAAAIQAhAAAE0vDJSScguOrNE3IgyI0bMIQoqUoF6q5jcLigsCzwJrtCAeSjDwoRAI4aLoNxxBCglEtJoFGUKFCEqCRxKkidoIP20aoVDaifFvB8XEGDseQEUjzoDq+87IijEnIPCSlpgWwhDIVyhyKKY4wOD3+BgyF3IXpjfHFvfYF4dmghalGQSgFgDmJaM2ZWWFEEKHYSTW1AojUMFEi3K7kgDRpCIUQkAcQgCDqtIT2kFgWpYVUaOzQ2NwvTIQfVHHw04iCZKibjNAPQMB7oDgiAixjzBOsbEQA7');
}

Click to see content: russia_putin_internet_urdu

7. لیکن سرکس کے شائقین میں کمی روس میں 60 مقامات مستقل طور پر سرکس کے لیے مختص ہیں اور ماسکو سٹیٹ سرکس جیسی سرکس کو ریاستی ادارے کا مقام حاصل ہے۔ لیکن ان کو مغربی سرکس سے سخت مقابلے کا سامنا ہے اور اس کے کئی افراد روسی سرکس چھوڑ کر مغربی سرکس میں شامل ہو گئے ہیں۔ 2010 سے سرکس جانے والوں کی تعداد 60 فیصد کم ہوئی ہے۔ اس کی کوئی ایک وجہ نہیں ہے بلکہ پسند میں تبدیلی، حریف اور انٹرنیٹ کے استعمال اضافہ سرکس کے شائقین میں کمی کی وجوہات ہو سکتی ہیں۔ 8. اور عوامی لائبریریاں بھیانٹرنیٹ کے استعمال میں اضافے کے باعث دیگر ممالک کی طرح روس میں بھی لائبریریوں کی مقبولیت میں کمی واقع ہوئی ہے۔ 9. روسی آبادی دوبارہ بڑھ رہی ہےصدر پوتن کے بڑے اہداف میں سے ایک روس میں آبادی میں بہت زیادہ کمی کو تبدیل کرنا ہے۔ روس میں آبادی میں کمی کا آغاز 1991 میں کمیونزم کے اخحتام پر شروع ہوا تھا۔ 2012 میں دوبارہ صدارتی عہدے کے لیے لڑنے سے قبل پوتن نے تجویز پیش کی تھی کہ شرح پیدائش کو بڑھانے کے لیے 53 بلین ڈالر خرچ کیے جائیں گے۔
@-webkit-keyframes spinnerRotate
{
from{-webkit-transform:rotate(0deg);}
to{-webkit-transform:rotate(360deg);}
}
@-moz-keyframes spinnerRotate
{
from{-moz-transform:rotate(0deg);}
to{-moz-transform:rotate(360deg);}
}
@-ms-keyframes spinnerRotate
{
from{-ms-transform:rotate(0deg);}
to{-ms-transform:rotate(360deg);}
}
.bbc-news-visual-journalism-loading-spinner {
display: block;
margin: 10px auto;
width: 33px;
height: 33px;
max-width: 33px;

-webkit-animation-name: spinnerRotate;
-webkit-animation-duration: 5s;
-webkit-animation-iteration-count: infinite;
-webkit-animation-timing-function: linear;
-moz-animation-name: spinnerRotate;
-moz-animation-duration: 5s;
-moz-animation-iteration-count: infinite;
-moz-animation-timing-function: linear;
-ms-animation-name: spinnerRotate;
-ms-animation-duration: 5s;
-ms-animation-iteration-count: infinite;
-ms-animation-timing-function: linear;

background-image: url('data:image/gif;base64,R0lGODlhIQAhALMAAMPDw/Dw8BAQECAgIICAgHBwcKCgoDAwMFBQULCwsGBgYEBAQODg4JCQkAAAAP///yH/C1hNUCBEYXRhWE1QPD94cGFja2V0IGJlZ2luPSLvu78iIGlkPSJXNU0wTXBDZWhpSHpyZVN6TlRjemtjOWQiPz4gPHg6eG1wbWV0YSB4bWxuczp4PSJhZG9iZTpuczptZXRhLyIgeDp4bXB0az0iQWRvYmUgWE1QIENvcmUgNS4zLWMwMTEgNjYuMTQ1NjYxLCAyMDEyLzAyLzA2LTE0OjU2OjI3ICAgICAgICAiPiA8cmRmOlJERiB4bWxuczpyZGY9Imh0dHA6Ly93d3cudzMub3JnLzE5OTkvMDIvMjItcmRmLXN5bnRheC1ucyMiPiA8cmRmOkRlc2NyaXB0aW9uIHJkZjphYm91dD0iIiB4bWxuczp4bXA9Imh0dHA6Ly9ucy5hZG9iZS5jb20veGFwLzEuMC8iIHhtbG5zOnhtcE1NPSJodHRwOi8vbnMuYWRvYmUuY29tL3hhcC8xLjAvbW0vIiB4bWxuczpzdFJlZj0iaHR0cDovL25zLmFkb2JlLmNvbS94YXAvMS4wL3NUeXBlL1Jlc291cmNlUmVmIyIgeG1wOkNyZWF0b3JUb29sPSJBZG9iZSBQaG90b3Nob3AgQ1M2IChNYWNpbnRvc2gpIiB4bXBNTTpJbnN0YW5jZUlEPSJ4bXAuaWlkOjFFOTcwNTgzMDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIiB4bXBNTTpEb2N1bWVudElEPSJ4bXAuZGlkOjFFOTcwNTg0MDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIj4gPHhtcE1NOkRlcml2ZWRGcm9tIHN0UmVmOmluc3RhbmNlSUQ9InhtcC5paWQ6MUU5NzA1ODEwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiIHN0UmVmOmRvY3VtZW50SUQ9InhtcC5kaWQ6MUU5NzA1ODIwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiLz4gPC9yZGY6RGVzY3JpcHRpb24+IDwvcmRmOlJERj4gPC94OnhtcG1ldGE+IDw/eHBhY2tldCBlbmQ9InIiPz4B//79/Pv6+fj39vX08/Lx8O/u7ezr6uno5+bl5OPi4eDf3t3c29rZ2NfW1dTT0tHQz87NzMvKycjHxsXEw8LBwL++vby7urm4t7a1tLOysbCvrq2sq6qpqKempaSjoqGgn56dnJuamZiXlpWUk5KRkI+OjYyLiomIh4aFhIOCgYB/fn18e3p5eHd2dXRzcnFwb25tbGtqaWhnZmVkY2JhYF9eXVxbWllYV1ZVVFNSUVBPTk1MS0pJSEdGRURDQkFAPz49PDs6OTg3NjU0MzIxMC8uLSwrKikoJyYlJCMiISAfHh0cGxoZGBcWFRQTEhEQDw4NDAsKCQgHBgUEAwIBAAAh+QQAAAAAACwAAAAAIQAhAAAE0vDJSScguOrNE3IgyI0bMIQoqUoF6q5jcLigsCzwJrtCAeSjDwoRAI4aLoNxxBCglEtJoFGUKFCEqCRxKkidoIP20aoVDaifFvB8XEGDseQEUjzoDq+87IijEnIPCSlpgWwhDIVyhyKKY4wOD3+BgyF3IXpjfHFvfYF4dmghalGQSgFgDmJaM2ZWWFEEKHYSTW1AojUMFEi3K7kgDRpCIUQkAcQgCDqtIT2kFgWpYVUaOzQ2NwvTIQfVHHw04iCZKibjNAPQMB7oDgiAixjzBOsbEQA7');
}

Click to see content: russia_putin_births_deaths_urdu

غالباً یہ اتفاق ہے کہ 2012 میں 21 سال میں پہلی بار روس کی شرح پیدائش میں اضافہ ہوا۔ اور جب 2017 میں شرح پیدائش میں دوبارہ کمی ہوئی تو پوتن کے مخالفین کو تنقید کا موقع ملا اور ان کا کہنا تھا کہ ایک سال میں شرح پیدائش میں 10.6 فیصد کمی ہوئی ہے۔ سب سے زیادہ شرح پیدائش چیچنیا اور داغستان جیسی کاکیشائی ریاستوں میں ہے جبکہ ماسکو میں سب سے مشہور بچوں کے نام ایلیگزینڈر اور صوفیہ ہیں۔ 10. اور پوتن ملٹری پر کہیں زیادہ خرچ کر رہے ہیںروس کی قومی شناخت میں طاقتور فوج کا ہمیشہ ہی سے اہم کردار رہا ہے لیکن سوویت یونین نے کولڈ وار کے دوران امریکہ کا مقابلہ کرنے میں اپنے آپ کو دیوالیہ کروا لیا۔ سوویت یونین کے خاتمے کے باعث مسلح افواج کا بجٹ کم کر دیا گیا۔ مسلح افواج کا سازو سامان پرانا ہو گیا اور حوصلے پست ہو گئے۔
@-webkit-keyframes spinnerRotate
{
from{-webkit-transform:rotate(0deg);}
to{-webkit-transform:rotate(360deg);}
}
@-moz-keyframes spinnerRotate
{
from{-moz-transform:rotate(0deg);}
to{-moz-transform:rotate(360deg);}
}
@-ms-keyframes spinnerRotate
{
from{-ms-transform:rotate(0deg);}
to{-ms-transform:rotate(360deg);}
}
.bbc-news-visual-journalism-loading-spinner {
display: block;
margin: 10px auto;
width: 33px;
height: 33px;
max-width: 33px;

-webkit-animation-name: spinnerRotate;
-webkit-animation-duration: 5s;
-webkit-animation-iteration-count: infinite;
-webkit-animation-timing-function: linear;
-moz-animation-name: spinnerRotate;
-moz-animation-duration: 5s;
-moz-animation-iteration-count: infinite;
-moz-animation-timing-function: linear;
-ms-animation-name: spinnerRotate;
-ms-animation-duration: 5s;
-ms-animation-iteration-count: infinite;
-ms-animation-timing-function: linear;

background-image: url('data:image/gif;base64,R0lGODlhIQAhALMAAMPDw/Dw8BAQECAgIICAgHBwcKCgoDAwMFBQULCwsGBgYEBAQODg4JCQkAAAAP///yH/C1hNUCBEYXRhWE1QPD94cGFja2V0IGJlZ2luPSLvu78iIGlkPSJXNU0wTXBDZWhpSHpyZVN6TlRjemtjOWQiPz4gPHg6eG1wbWV0YSB4bWxuczp4PSJhZG9iZTpuczptZXRhLyIgeDp4bXB0az0iQWRvYmUgWE1QIENvcmUgNS4zLWMwMTEgNjYuMTQ1NjYxLCAyMDEyLzAyLzA2LTE0OjU2OjI3ICAgICAgICAiPiA8cmRmOlJERiB4bWxuczpyZGY9Imh0dHA6Ly93d3cudzMub3JnLzE5OTkvMDIvMjItcmRmLXN5bnRheC1ucyMiPiA8cmRmOkRlc2NyaXB0aW9uIHJkZjphYm91dD0iIiB4bWxuczp4bXA9Imh0dHA6Ly9ucy5hZG9iZS5jb20veGFwLzEuMC8iIHhtbG5zOnhtcE1NPSJodHRwOi8vbnMuYWRvYmUuY29tL3hhcC8xLjAvbW0vIiB4bWxuczpzdFJlZj0iaHR0cDovL25zLmFkb2JlLmNvbS94YXAvMS4wL3NUeXBlL1Jlc291cmNlUmVmIyIgeG1wOkNyZWF0b3JUb29sPSJBZG9iZSBQaG90b3Nob3AgQ1M2IChNYWNpbnRvc2gpIiB4bXBNTTpJbnN0YW5jZUlEPSJ4bXAuaWlkOjFFOTcwNTgzMDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIiB4bXBNTTpEb2N1bWVudElEPSJ4bXAuZGlkOjFFOTcwNTg0MDlCMjExRTQ4MDU3RThBRkIxMjYyOEYyIj4gPHhtcE1NOkRlcml2ZWRGcm9tIHN0UmVmOmluc3RhbmNlSUQ9InhtcC5paWQ6MUU5NzA1ODEwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiIHN0UmVmOmRvY3VtZW50SUQ9InhtcC5kaWQ6MUU5NzA1ODIwOUIyMTFFNDgwNTdFOEFGQjEyNjI4RjIiLz4gPC9yZGY6RGVzY3JpcHRpb24+IDwvcmRmOlJERj4gPC94OnhtcG1ldGE+IDw/eHBhY2tldCBlbmQ9InIiPz4B//79/Pv6+fj39vX08/Lx8O/u7ezr6uno5+bl5OPi4eDf3t3c29rZ2NfW1dTT0tHQz87NzMvKycjHxsXEw8LBwL++vby7urm4t7a1tLOysbCvrq2sq6qpqKempaSjoqGgn56dnJuamZiXlpWUk5KRkI+OjYyLiomIh4aFhIOCgYB/fn18e3p5eHd2dXRzcnFwb25tbGtqaWhnZmVkY2JhYF9eXVxbWllYV1ZVVFNSUVBPTk1MS0pJSEdGRURDQkFAPz49PDs6OTg3NjU0MzIxMC8uLSwrKikoJyYlJCMiISAfHh0cGxoZGBcWFRQTEhEQDw4NDAsKCQgHBgUEAwIBAAAh+QQAAAAAACwAAAAAIQAhAAAE0vDJSScguOrNE3IgyI0bMIQoqUoF6q5jcLigsCzwJrtCAeSjDwoRAI4aLoNxxBCglEtJoFGUKFCEqCRxKkidoIP20aoVDaifFvB8XEGDseQEUjzoDq+87IijEnIPCSlpgWwhDIVyhyKKY4wOD3+BgyF3IXpjfHFvfYF4dmghalGQSgFgDmJaM2ZWWFEEKHYSTW1AojUMFEi3K7kgDRpCIUQkAcQgCDqtIT2kFgWpYVUaOzQ2NwvTIQfVHHw04iCZKibjNAPQMB7oDgiAixjzBOsbEQA7');
}

Click to see content: russia_putin_military_gdp_urdu

ویلادیمیر پوتن نے بہت پہلے عزم کیا تھا کہ اس تنزلی کو الٹا کریں گے اور روس کی مسلح افواج کو جدید فورس بنائیں گے۔ مسلح افواج کو جدید سازو سامان سے لیس کرنے پر بہت زیادہ خرچ کیا جا رہا ہے۔ پوتن کے دورِ اقتدار میں روس نے اپنی عسکریت قوت کا مظاہرہ چیچنیا، جارجیا اور مشرقی یوکرین کے علاوہ حال ہی میں شام میں دکھایا ہے۔ پیشکش: ایلکس مرے، ٹام ہوزڈنتجزیہ: انستازیہ نپلکووا، بی بی سی روسگرافک ڈیزائن: سینڈرا روڈرگز، جوئے روکسس، زو بارتھلومیو

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}