ٹرمپ پر الزام لگانے والی پورن سٹار عریاں کلب سے ’گرفتار‘

ٹرمپ پر الزام لگانے والی پورن سٹار عریاں کلب سے ’گرفتار‘

July 12, 2018 - 16:57
Posted in:

امریکی پورن سٹار سٹورمی ڈینیئلز کو ریاست اوہائیو کے شہر کولمبس کے ایک عریاں کلب سے ’گرفتار‘ کر لیا گیا ہے۔ یہ بات ان کے وکیل نے بتائی ہے۔ ڈینیئلز کو مبینہ طور پر 'سائرنز' نامی کلب کے ایک گاہک کو خود کو 'غیر جنسی انداز میں' چھونے کی پاداش میں ’گرفتار‘ کیا گیا۔ ڈینیئلز اس وقت مشہور ہو گئی تھیں جب انھوں نے دعویٰ کیا تھا کہ انھوں نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ 2006 میں سیکس کیا تھا۔ صدر ٹرمپ اس کی تردید کرتے ہیں۔ ان کے وکیل مائیکل اوینیٹی نے کہا ہے کہ اس گرفتاری کی وجوہات 'سیاسی' ہیں اور یہ ان کی موکلہ کو پھنسانے کی کوشش ہے۔ کولمبس پولیس کے ترجمان نے ابھی تک گرفتاری کی تصدیق نہیں کی۔ اوینیٹی نے ٹویٹ میں کہا کہ ان کی موکلہ وہی پرفارمنس دے رہی تھیں جو وہ ملک کے ایک سو عریاں کلبوں میں ایک عرصے سے دیتی آئی ہیں۔انھوں نے کہا کہ وہ توقع رکھتے ہیں کہ انھیں جلد ہی ضمانت پر رہا کر دیا جائے گا۔

@MichaelAvenatti کی ٹوئٹر پر پوسٹ کا خاتمہ

@MichaelAvenatti کی ٹوئٹر پر پوسٹ سے آگے جائیں

ریاست اوہائیو کے ایک قانون کے تحت عریاں یا نیم عریاں رقاصہ کو چھونے کی ممانعت ہے، سوائے اس کے کہ وہ آپس میں رشتہ دار ہوں۔ سائرنز نے گذشتہ ماہ ٹویٹ کے ذریعے مشتہر کیا تھا کہ ڈینیئلز 11 اور 12 جولائی کو پرفارم کریں گی۔ تاہم کلب نے اس واقعے کی تفصیل بتانے سے گریز کیا ہے۔ ڈینیئلز کا کہنا ہے کہ انھیں 2016 کے صدارتی انتخاب سے قبل ٹرمپ سے جنسی تعلق کے بارے میں منہ بند رکھنے کے لیے ایک لاکھ 30 ہزار ڈالر دیے گئے تھے۔ صدر ٹرمپ نے پہلے کہا تھا کہ یہ پیسے ان کے وکیل نے ان کے علم کے بغیر دیے تھے لیکن بعد میں پتہ چلا کہ پیسے انہی کے کھاتے سے گئے تھے۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}