نظامِ انہضام کو دوسرا دماغ کیوں کہا جاتا ہے؟

نظامِ انہضام کو دوسرا دماغ کیوں کہا جاتا ہے؟

October 08, 2018 - 08:59
Posted in:

آپ کے جسم کے کس حصے میں ریڑھ کی ہڈی کے ساتھ والی سپائنل کورڈ یا حرام نس سے بھی زیادہ نیورون ہوتے ہیں اور وہ مرکزی نظام عصبی کے تحت کام کرنے کے بجائے آزادانہ طور پر کام کرتے ہیں۔شاید معدے کی آنت آپ کا پہلا جواب نہیں تھا۔ لیکن ہماری آنتیں لاکھوں کروڑوں نیورون سے جڑی ہوئی ہیں اور شاید اسی لیے اسے ہمارے 'دوسرے دماغ' کا نام دیا گیا ہے۔یہ بھی پڑھیےآنتوں کے بیکٹریا کینسر کے علاج میں مددگارکھانا بنانے کی شوقین ایک بغیر پیٹ والی لڑکی!کیا پروٹین سے وزن کم کیا جا سکتا ہے؟کیمرہ کیپسول، چھوٹی آنت کی بیماری کا پتہ چلانے کی ’دوا‘ہمارے نظامِ انہظام کے پاس ہم جو کھاتے ہیں اسے پراسیس کرنے کے علاوہ اور بھی کام ہیں۔ اس میں آباد اور پلنے والے جرثومے ہماری صحت اور طبیعت کو متاثر کر سکتے ہیں۔سائنسدان اس بات کے متعلق تحقیق کر رہے ہیں کہ آیا آنتوں کی صحت کو بہتر بنانے سے کیا ہمارے مدافعتی نظام میں کچھ مدد مل سکتی ہے اور کیا اس سے ذہنی بیماریوں کا علاج کا جا سکتا ہے۔مندرجہ ذیل میں ہماری آنتوں کے بارے میں چند حیرت انگیز حقائق دیے جا رہے ہیں:1. یہ ایک خود مختار نظام اعصاب ہے

6. اگر آپ کے اہل خانہ کسی غذا کو آپ کے لیے مضر سمجھتے ہیں تو آپ اس کو محسوس کرنے لگیں گےبعض لوگوں کے معدے بہت حساس ہوتے ہیں۔ لیکن ڈاکٹر روسی کا کہنا ہے کہ تازہ تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ اگر آپ کسی مخصوص غذا کے کھانے سے ڈرتے ہیں تو اس کے کھانے کے بعد آپ کو اس سے تکلیف ہو سکتی ہے۔انھوں نے کہا: 'ہم دیکھتے ہیں کہ کس طرح کوئی بات جس پر آپ کا یقین ہے وہ آپ کے معدے کے لیے مسائل کھڑا کر دیتا ہے۔'بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ گلوٹن یا دودھ کے اجزا ان کے لیے مضر ہیں اور اگر ان کا نظام واقعتا اس کو نہ برداشت کرنے والا یا اس سے الرجک نہیں بھی ہے تو بھی ان غذاؤں کے کھانے کے بعد ان کو مسئلہ پیدا ہو سکتا ہے۔7. آپ اپنے ہاضمے کی صحت کو بہتر بنا سکتے ہیںڈاکٹر روسی نے خوش معدے کے لیے بعض عادات کو اپنانے کا مشورہ دیا ہے جو درج ذیل ہیں:

  • مختلف اقسام کی غذائيں کھائیں تاکہ آپ کے معدے میں پلنے والے بیکٹریا مختلف النوع ہوں
  • اپنے طبیعت کے حساب سے اپنے دباؤ کو کم کرنے کے طریقے اپنائیں جیسے مراقبہ کریں، آرام کریں، ذہن کو مرکوز کریں یا یوگا کریں۔
  • اگر آپ کو پہلے سے ہی معدے کی تکلیف ہے تو شراب نوشی، کیفین اور مسالے دار کھانوں سے بچیں۔ یہ چیزیں آپ کے مسائل کو بڑھا سکتی ہیں۔
  • بہتر نیند لینے کی کوشش کریں۔

ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اگر آپ اپنے سونے کے اوقات کو تبدیل کرتے ہیں تو اس سے آپ کے معدے کے جراثیم کا نظام بھی متاثر ہوتا ہے۔ یاد رکھیں کہ آپ کو ان کا اچھی طرح سے خیال رکھنے کی ضرورت ہے۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}