قومی ورثے نزرل اکیڈمی کوہرگزمسمار نہیں کرنے دینگے‘ڈاکٹرنورالحق انصاری

قومی ورثے نزرل اکیڈمی کوہرگزمسمار نہیں کرنے دینگے‘ڈاکٹرنورالحق انصاری

August 10, 2018 - 13:39
Posted in:

قاضی نزرل الاسلام تحریک پاکستان کے اکابرین سے ہیں انکے نام سے منسوب اکیڈمی کومسمارکیا جارہاہے
چیف جسٹس آف سپریم نزرل اکیڈمی کو مسمار کرنے کی کوشش کا فوری نوٹس لیں،اجلاس کے شرکاء سے خطاب
کراچی:تحریک آزادی کو پروان چڑھانے والے شاعر بنگال قاضی نزرل الاسلام کی قومی وملی خدمات کے اعتراف میں حکومت پاکستان کی جانب سے 1952ء میں ان کے نام پر نزرل اکیڈمی کوقائم کیا گیا۔1976ء میں اسوقت کے صدرپاکستان جنرل ضیاء الحق نے پاکستان بیرکس کراچی میں نزرل اکیڈمی کیلئے جگہ الاٹ کی
جہاں آج بھی یہ اکیڈمی موجود ہے ۔ جدوجہد آزادی میں شریک قاضی نزرل الاسلام کی خدمات کا اعتراف سرکاری سطح پر کیا گیا اور اکیڈمی ادبیات پاکستان کے زیرانتظام کراچی میں نزرل اکیڈمی بھرپورانداز میں جدوجہدپاکستان کی یادیوں کو محفوظ کرنے اور صوفی و قومی شعراء کرام کے مجموعہ کلام کو شائع کرتی رہی ۔قاضی نزرل الاسلام کا شمار تحریک پاکستان کے اکابرین میں ہوتا ہے ان کے نام سے منسوب اکیڈمی ہمارا تاریخی وقومی ورثہ ہے مگر اب اس تاریخی ورثے کو مسمار کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔
جس کے باعث ہر محب وطن پاکستانی میں شدید غم و غصہ پایا جاتاہے ۔ان خیالات کا اظہار پاک ماہی گیر ویلفیئر ایسو سی ایشن کے ہنگامی اجلاس میں نزرل اکیڈمی کے جوائنٹ سیکریٹری ڈاکٹرنور الحق انصاری نے کیا ۔ اجلاس میں پاک ماہی گیر ویلفیئرایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری اور نزرل اکیڈمی کے لائف ممبرراشد سردار،نزرل اکیڈمی کے لائف ممبر خواجہ سلمان، محمد رفیق، پاک ماہی گیر ویلفیئرایسوسی ایشن کے چیئرمین سردار معین، سینئر نائب صدر بشیراحمد، جوائنٹ سیکریٹری یونس شیخ، علیشاہ ناز ودیگرنے شرکت کی۔اجلاس میں متفقہ طورپرفیصلہ کیا گیا کہ تاریخی وقومی ورثے نزرل اکیڈمی کومسمار کرنے کی کوشش کوہرگز کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔ اجلاس میں چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس ثاقب نثارسے اپیل کی گئی کہ پاکستان کے تاریخی وقومی ورثے نزرل اکیڈمی کو مسمار کرنے کی کوشش کا فوری نوٹس لیں۔
بشکریہ جسارتbody {direction:rtl;} a {display:none;}