فیض آباد دھرنا کیس،تحریک لبیک کی رجسٹریشن پر الیکشن کمیشن کو نوٹس

فیض آباد دھرنا کیس،تحریک لبیک کی رجسٹریشن پر الیکشن کمیشن کو نوٹس

October 11, 2018 - 23:51
Posted in:

اسلام آباد(اے پی پی) عدالت عظمیٰ نے فیض آباد دھرنا کے حوالے سے از خود نوٹس کیس میں تحریک لبیک کی رجسٹریشن پرالیکشن کمیشن کو نوٹس جاری کردیا ہے۔ جمعرات کوجسٹس مشیرعالم اورجسٹس فائز عیسیٰ پرمشتمل 2رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔اس موقع پراٹارنی جنرل انور منصور نے عدالت کوبتایا کہ وزارت دفاع کی جانب سے جواب جمع کرادیا گیا ہے جس میں تما م عدالتی سوالوں کے جوابات موجود ہیں۔ فاضل جج نے استفسارکیاکہ جب ایک شخص کہتا ہے کہ وہ آئین پاکستان کو نہیں مانتا توکیا وہ سیاسی جماعت رجسٹرڈ کروا سکتا ہے جس پر اٹارنی جنرل نے بتایا کہ تحریک لبیک نے دھرنے سے قبل رجسٹریشن کرلی تھی ۔جسٹس فائز عیسیٰ کاکہناتھا کہ اس طرح تو کل کوئی بھی کسی سرکاری عمارت پر قبضہ کر لے گا،یہ پاکستان خوف کے لیے نہیں بلکہ ایک نظریہ کے تحت بنایا گیا تھا اوریہ ہم سب کاپاکستان ہے۔جسٹس مشیرعالم نے اٹارنی جنرل سے کہاکہ اگر کوئی سیاسی جماعت قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کرے تو کیا اس ضمن میں کارروائی کے لیے کونسا قانون لاگو ہوگا ، حکومت کو تو چاہیے کہ آئین کی توہین کا ارتکاب کرنے والے افراد کے خلاف کارروائی کرے، جس پراٹارنی جنرل نے بتایا کہ اس جماعت کو دھرنے سے پہلے رجسٹرڈ کرکے انتخابی نشان بھی دیا گیا ،جسٹس قاضی فائز عیسٰی نے کہاکہ انتخابی نشان کی الاٹمنٹ تو بعد کی بات ہے پہلے ہمیں یہ دیکھنا ہوگا کہ اس سیاسی جماعت کی رجسٹریشن کیوں کی گئی۔سماعت کے دوران جسٹس قاضی فائز عیسی نے ڈی جی پیمرا سے استفسارکیا کہ کیا پیمرا نے 2 ٹی وی چینلز کی نشریات پر پابندی لگائی تھی جس پرڈی جی پیمرا نے کہاکہ کسی ٹی وی چینلز کی نشریات پر پابندی نہیں لگائی گئی، توفاضل جج نے کہاکہ ہم آپ کے خلاف غلط بیانی کی کارروائی کریں گے،گزشتہ سماعت پر عدالت کو بتایا گیا تھا کہ 2 ٹی وی چینلز کی نشریات بند کردی گئی تھی ۔ بعدازاں عدالت نے پیمرا سے چینلز کی بندش پر تفصیلی جواب طلب کر تے ہوئے ہدایت کی کہ عدالت کو تحریک لبیک کی رجسٹریشن کے لیے دی گئی درخواست بھی پیش کی جائے۔
بشکریہ جسارتbody {direction:rtl;} a {display:none;}