فلاح انسانیت فاؤنڈیشن کے خلاف کریک ڈاؤن شروع

فلاح انسانیت فاؤنڈیشن کے خلاف کریک ڈاؤن شروع

February 14, 2018 - 19:45
Posted in:

اقوم متحدہ کی جانب سے کالعدم قراد دی گئی تنظیموں پر پاکستان میں پابندی کے اعلان کے بعد حکومت نے فلاحِ انسانیت فاؤنڈیشن کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کر دیا ہے۔وزیرِ مملکت برائے خزانہ رانا افضل نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے تصدیق کی ہے کہ فلاحِ انسانیت فاؤنڈیشن کی سرگرمیوں پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔پاکستان کی جانب سے شدت پسند تنظیموں کے خلاف کارروائی ایک ایسے موقع پر سامنے آئی ہے، جب آئندہ ہفتے پیرس میں ہونے والے فائننشل ایکشن ٹاسک فورس ( ایف اے ٹی ایف) کے اجلاس میں پاکستان کو واچ لسٹ میں ڈالنے کے لیے تحریک پیش کی جا رہی ہے۔یہ بھی پڑھیےاقوام متحدہ کی فہرست میں شامل تنظیمیں پاکستان میں کالعدم’جماعت الدعوۃ کے خلاف کریک ڈاؤن کے پیچھے امریکہ ہے‘جماعت الدعوۃ کے لیے عطیات اور چندہ جمع کرنے پر پابندیحافظ سعید کا بوجھایف اے ٹی ایف کی جانب سے پاکستان کو خبردار کیا گیا تھا کہ عسکریت پسندوں کی مالی معاونت کے خلاف کارروائی نہ کرنے پر پاکستان کو دوبارہ واچ لسٹ میں شامل کیا جا سکتا ہے۔رانا افضل نے بتایا کہ پاکستان نے دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے کے بہت سے اقدامات کیے ہیں اور اس حوالے سے بین الاقوامی فائنشل ایکشن ٹاسک فورس کی شقوں پر عمل درآمد کو یقینی بنایا ہے۔انھوں نے کہا کہ اب کچھ ممالک اس سلسلے میں پاکستان پر مزید دباؤ ڈال رہے ہیں اور پاکستان نہیں چاہتا کہ اُسے واچ لسٹ میں ڈالا جائے۔

انھوں نے کہا کہ حکومتِ پاکستان کی جانب سے اس اقدام کو ناکام بنانے کے لیے بھی کوششیں تیز کردی ہیں۔واضح رہے کہ ایف ٹی اے ایف ایک بین الحکومتی ادارہ ہے جو شدت پسندوں کی معاونت کرنے والوں کا تعین کرتا ہے۔یاد رہے کہ دو ہزار بارہ سے دو ہزار پندرہ تک پاکستان فائنشل ایکشن ٹاسک فورس کی واچ لسٹ میں رہ چکا ہے۔ پاکستان کے وزیر مملکت برائے خزانہ نے کہا کہ پاکستان امریکہ، برطانیہ، جرمنی اور فرانس سے رابطے میں ہے تاکہ عالمی واچ لسٹ میں پاکستان کی نامزدگی کو روکا جاسکے۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}