غیروں پہ کھل نہ جائے کہیں راز دیکھنا!

غیروں پہ کھل نہ جائے کہیں راز دیکھنا!

August 01, 2018 - 17:59
Posted in:

راز بڑی آسانی سے گرفت سے پھسل کر نکل جاتے ہیں۔ بی بی سی کے سینیئر صحافی مارک ٹلی نے اس سوال کا جائزہ لیا ہے کہ کیا ہر وقت سچ بولنا ہی مناسب حکمتِ عملی ہے یا پھر انسان کو دل میں کچھ راز چھپا کر بھی رکھنے چاہییں؟ماہرینِ نفسیات کے مطابق راز دل میں چھپانے سے نہ صرف انسان ناخوش رہتا ہے بلکہ اس سے اس کی صحت بھی متاثر ہو سکتی ہے۔ اس لیے مناسب یہی ہے کہ کوئی راز نہ رکھا جائے۔ لیکن بعض اوقات راز رکھنا مجبوری بن جاتا ہے۔ ایسی ہی چند وجوہات یہاں پیش کی جاتی ہیں:1. جب راز آپ کی ذاتی زندگی سے متعلق ہو

دوسری جنگِ عظیم کے دوران بہت سے راز ایسے تھے جن پر لوگوں کی زندگیوں کا انحصار تھا۔ کائلر خاندان نے نازیوں کے مقبوضہ ڈنمارک میں سے ایک ہزار یہودیوں کو خفیہ طور پر نکال کر سویڈن پہنچایا اور اس مقصد کے لیے دو دن کے اندر اندر خفیہ طور پر دس لاکھ کرونر عطیات کی شکل میں اکٹھے کیے۔ یہ رقم سپاہیوں کو بطور رشوت اور ملاحوں کو بطور معاوضہ دی گئی تاکہ وہ لوگوں کو سمندر کے پار سویڈن تک پہنچا سکیں۔ اس کے علاوہ دنیا کی ہر حکومت اپنے دشمن ملکوں اور دہشت گردوں کے بارے میں خفیہ معلومات رکھتی ہے تاکہ ان کی طرف سے ممکنہ حملوں کو روکا جا سکے۔ اسی مقصد کے لیے مختلف ملکوں کے اندر ایسے ادارے کام کرتے ہیں جن کا نام ہی ان کے کام کی نشان دہی کرتا ہے، یعنی سیکرٹ سروس۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}