ساز و سروز اور سر دھنتی ہوئی خواتین

ساز و سروز اور سر دھنتی ہوئی خواتین

February 14, 2018 - 07:07
Posted in:

کھلے میدان میں ایک چٹائی بچھی ہوئی ہے، ایک شخص بین بجا رہا ہے جبکہ اس کے ساتھ بینجو اور سروز بھی موجود ہیں۔ اس ساز و سروز پر دو خواتین کھلے بالوں سمیت سر دھن رہی ہیں۔ ان خواتین کے بارے میں رشتے داروں کا ماننا ہے کہ ان پر جادو یا جنات کے اثرات ہیں، ان سازوں کی مدد سے ان پر قابو پالیا جائے گا۔ ارباب کھوسہ حیدرآباد سے اپنی والدہ کے ساتھ آئے ہیں وہ گذشتہ کئی سال سے یہاں کے چکر لگا رہے ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ ان کے والد کا کئی سال پہلے انتقال ہوگیا جس کے بعد سے والدہ کا دماغ کام نہیں کرتا اور جنات کا بھی حساب ہے۔وہ کہتے ہیں: ’ہم نے ڈاکٹر سے دوا وغیرہ کرائی تھی لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا جس کے بعد ہم نے سوچا کہ فقیروں سے روحانی علاج کرائیں، ہوسکتا ہے چھٹکارہ ہوجائے، ہم ہر سال یہاں آرہے ہیں۔‘ گاجی شاہ کے مزار پر ارباب علی کی طرح کئی درجن لوگ اپنی والدہ، بیوی، بہن یا بیٹی کے ساتھ آئے ہیں جن کے بارے میں ان کا خیال ہے کہ ان پر جنات کا اثر ہے، گاجی شاہ کا مزار ضلع دادو میں سندھ اور بلوچستان کے پہاڑوں کے درمیان واقع ہے، ہر سال یہ بیابان اور ویران علاقہ تین روز کے سج جاتا ہے۔

گاجی شاہ کا مزار جس علاقے میں واقع ہے اس پورے ضلعے میں نفسیاتی بیماریوں کے علاج کا ایک بھی مرکز موجود نہیں ہے، سہون میں حال ہی میں سید عبداللہ شاہ انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنس قائم کیا گیا ہے لیکن وہاں بھی شعبہ نفسیات نہیں ہے۔ گاجی شاہ کے مزار پر پینے کے پانی کا فقدان ہے جبکہ مزار کی سکیورٹی بھی نہ ہونے کے برابر ہے جبکہ اس سے قبل فتح پور اور شاہ نورانی میں بھی ایسے ہی حالات کی وجہ سے دھماکے ہوچکے ہیں۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}