دس برسوں کے دوران ملک میں20288.9 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی

دس برسوں کے دوران ملک میں20288.9 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی

August 10, 2018 - 13:19
Posted in:

پاکستان ان ممالک میں شامل ہے جہاں غیر ملکی سرمایہ کاری کی ترغیبات اور سہولیات فراہم  ہیں
کراچی: گزشتہ10برسوں کے دوران ملک میں مجموعی طور پر20288.9 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ریکارڈ کی گئی، پاکستان ان ممالک میں شامل ہے جہاں غیر ملکی سرمایہ کاری کی ترغیبات اور سہولیات فراہم کی جارہی ہیں،
گزشتہ ایک عشرے کے دوران ملک میں ٹیلی کام، توانائی اور بنیادی ڈھانچے کے منصوبوں کے علاوہ ٹیکسٹائل اور بزنس جیسے شعبوں میں بھی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی ہے۔سرمایہ کاری بورڈ کی جانب سے جاری کردہ اعداد وشمارکے مطابق مالی 2008۔9ء کے دوران پاکستان میں مجموعی طورپر 3719.9 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ریکارڈ کی گئی۔ مالی سال 2009۔10ء، 2010۔11ء اور 2011۔12ء میں بالترتیب 2150.8، 1634.8 اور 820.7 ملین ڈالر براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ریکارڈ کی گئی۔مالی سال 2012۔13ء ، 2013۔14ء اور 2014۔15ء میں بالترتیب 820.7، 1456.5 اور 1698.9 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری ہوئی۔اسی طرح مالی سال 2014۔15 ء ، 2015۔16ء اور 2016۔17ء کے دوران ملک میں بالترتیب 987.9، 2305.3 اور 2746.8 ملین ڈالر براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ریکارڈ کی گئی۔
گزشتہ مالی سال 2017۔18ء کے دوران ملک میں براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 2767.6 ملین ڈالر ریکارڈ کیا گیا۔ تاجروں اورسرمایہ کاروں کے مطابق ملک میں براہ راست سرمایہ کاری کی گنجائش موجود ہیں اورضرورت اس امر کی ہے کہ زیادہ سے زیادہ غیرملکی سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کیلئے خصوصی اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔سارک چیمبرز آف بزنس کے سینئرنائب صدر افتخارعلی ملک کے مطابق غیرملکی سرمایہ کاری اور ملکی معیشت کے استحکام کیلئے عمران خان کی قیادت میں تحریک انصاف کی حکومت کو براہ راست سرمایہ کاری کو
پاکستان کی طرف متوجہ کرنے کے لئے خصوصی مراعاتی پیکج کا اعلان کرنا ہوگا۔ افتخار علی ملک نے کہا کہ مینو فیکچرنگ اور انفراسٹر کچر سیکٹرز میں پائیدار ترقی کیلئے طویل مدتی غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری کا راستہ کھولنا ہوگا کیونکہ اس سے روزگار کے مواقع اور معاشی ترقی میں اضافہ ہو گا۔غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ کیلئے بہترین منصوبہ بندی، سرخ فیتے کے خاتمہ اور غیر ضروری قانونی رکاوٹوں کے خاتمے کے علاوہ ون ونڈو آپریشن کے ذریعہ تمام سہولیات فراہم کرنا ہونگی۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ نئی حکومت تیز رفتار ترقی اور غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری کی راہ میں حائل رکاوٹوں مثلاً سکیورٹی، توانائی اور غیر متوازن پالیسی جیسے اہم مسائل کے حل پر توجہ مرکوز کرے گی۔
بشکریہ جسارتbody {direction:rtl;} a {display:none;}