خاتون پر امریکہ میں روس کے لیے جاسوسی کرنے کا الزام عائد

خاتون پر امریکہ میں روس کے لیے جاسوسی کرنے کا الزام عائد

July 17, 2018 - 04:06
Posted in:

امریکی حکومت نے ایک 29 سالہ روسی خاتون پر سیاسی تنظیموں میں شامل ہو کر روسی حکومت کی جاسوسہ کے طور پر سازش کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ امریکی میڈیا کے مطابق ماریا بوتینا نے رپبلکن پارٹی میں شامل ہو کر اسلحے کے حق میں مہم چلائی تھی۔ ان الزام کا تعلق اس تفتیش سے نہیں ہے جو 2016 کے صدارتی انتخابات میں مبینہ مداخلت کے بارے میں جاری ہے۔الزام ہے کہ بوتینا کریملن کے ایک اعلیٰ عہدے دار کی ہدایات پر کام کر رہی تھیں۔ تاہم ان کے وکیل رابرٹ ڈرسکول نے پیر کو ایک بیان میں کہا کہ ان کی موکلہ 'جاسوس' نہیں ہیں بلکہ وہ بین الاقوامی امور کی طالبہ ہیں اور اپنی تعلیم کو بزنس میں کریئر بنانے کے لیے استعمال کر رہی تھیں۔ بوتینا واشگٹن میں مقیم تھیں اور انھیں اتوار کو گرفتار کیا گیا۔ وہ اس وقت حراست میں ہیں اور انھیں بدھ کو عدالت میں پیش کیا جائے گا۔ اس گرفتاری کا اعلان اس وقت ہوا جب امریکی صدر ٹرمپ روسی صدر ولادی میر پوتن سے ہیلسنکی میں ملاقات کے بعد روسی اقدامات کا دفاع کر رہے تھے۔ اس سے چند ہی روز قبل امریکی محکمۂ انصاف نے 12 روسیوں کو انتخابات میں مداخلت کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔ پیر کو ایف بی آئی کے اہلکار کیون ہیلسن نے کہا ہے کہ بوتینا کو 'امریکی شہریوں کے ساتھ ذاتی تعلقات استعمال کر کے امریکی سیاست پر اثرانداز ہونے کا کام سونپا گیا تھا تاکہ روسی فیڈریشن کے مفادات کو تقویت دی جا سکے۔'استغاثہ کا کہنا ہے کہ بوتینا نے یہ کام اپنی سرگرمیاں امریکی حکومت کے پاس رجسٹر کروائے بغیر کیا۔

محکمۂ انصاف نے کہا کہ بوتینا نے اسلحے کی حامی تنظیموں کے ساتھ تعلقات بڑھانا چاہے تھے۔ الزام میں کہا گیا ہے کہ بوتینا 'روسی مفادات کو تقویت دینے کی خاطر' بااثر امریکی سیاست دانوں سے تعلقات بڑھنا چاہتی تھیں۔الزام کے مطابق وہ اپنی سرگرمیوں کی اطلاع روسی حکومت کو ٹوئٹر کے ڈائریکٹ میسج کے ذریعے دیا کرتی تھیں۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}