بھارت آگ سے نہ کھیلے‘ ایٹمی جنگ چھڑسکتی ہے‘جنرل زبیر

بھارت آگ سے نہ کھیلے‘ ایٹمی جنگ چھڑسکتی ہے‘جنرل زبیر

November 14, 2017 - 23:44
Posted in:

اسلام آباد/راولپنڈی(نمائندہ جسارت +صباح نیوز ) چیئر مین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات نے خبردارکیا ہے کہ بھارت آگ سے نہ کھیلے ، ایٹمی جنگ چھڑسکتی ہے۔ان کے بقول بھارت کی جانب سے کنٹرول لائن پررواں برس 1200سے زائد سیزفائر معاہدے کی خلاف ورزیاں ہوچکی ہیں جس کے نتیجے میں 1000شہری اور 300فوجی جوان شہید ہوئے، پاکستان کے خلاف جنگی ہیجان واضح ہے،سرجیکل اسٹرائیک جیسے شوشے اس کی اہم مثال ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نئی دہلی کو پتا ہونا چاہیے کہ وہ آگ کے ساتھ کھیل رہا ہے اورپاکستان سے ذیلی روایتی جنگ جاری رکھے ہوئے ہے جو کہ کسی بھی وقت بڑی جنگ میں بدل سکتی ہے، مسئلہ کشمیر بدستور جوہری جنگ کے خطرات کا پیش خیمہ ہے جب کہ بھارت سے خوشگوار تعلقات کا راستہ صرف کشمیر سے ہوکر گزرتا ہے اس میں کوئی با ئی پاس نہیں۔ان خیالات کا اظہار جنرل زبیر محمود حیات نے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں جنوبی ایشیامیں تذویراتی خدشات اور علاقائی جہتوں سے متعلق عالمی کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں بھارتی فوج کا ظلم بڑھ رہا ہے‘ ہر 20 کشمیریوں پر ایک بھارتی فوجی تعینات ہے، 94 ہزار کشمیری شہید کیے جا چکے،ہزاروں کی بینائی جا چکی۔ جنرل زبیر کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کے حل سے جنوبی ایشیا میں دیرپا امن ممکن ہے، پاکستان مسئلہ کشمیر اور افغان مسائل کا حل چاہتا ہے اور تمام اْمور پر یکساں پیشرفت چاہتے ہیں۔ چیئرمین جوائنٹ چیفس کے مطابق پاکستان تمام تنازعات کا پرامن حل چاہتاہے اوراپنی ذمے داریوں سے آگاہ ہے مگر دفاع سے غافل نہیں، پاکستان تمام حالات کے تناظر میں کم از کم جوہری صلاحیت برقرار رکھے گا۔ان کے بقول بھارت میں انتہاپسندی بڑھ رہی ہے، بھارت سیکولر سے انتہا پسند ہندو ملک بن چکا ،بھارت ٹی ٹی پی، بلوچ علیحدگی پسندوں اور ’را‘ کے ذریعے پاکستان میں دہشت گردی کرا رہا ہے، سی پیک کے خلاف بھارتی سازشیں کسی سے ڈھکی چھپی نہیں،بھارت میزائل ڈیفنس ٹیکنالوجی، جوہری ہتھیاروں اور روایتی ہتھیاروں میں تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے، بھارت مقبوضہ کشمیر میں خون بہارہا ہے اور پاکستان کا پانی روک رہا ہے، خون اور پانی ایک ساتھ نہیں بہہ سکتا لیکن بھارت ایسا کررہا ہے۔جنرل زبیر محمود کا کہنا تھا کہ عالمی سطح پر طاقت کا حصول جنوبی ایشیامیں عدم استحکام کا باعث ہے، سیاسی و تذویراتی مسائل تنازعات کو بڑھاوا دے رہے ہیں،بیرونی طاقتیں بڑے تذویراتی ڈیزائنز کو آگے بڑھانے کے لیے کوشاں ہیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ افغان عدم استحکام کی پاکستان بھاری قیمت چکا رہا ہے، افغان سرزمین پر دہشت گردی کے ٹھکانے کلیدی مسائل کا باعث ہیں، افغانستان سمیت خطے کے دیگر تنازعات کے پرامن حل کے برعکس کوئی اور حکمت عملی جنوبی ایشیا میں کسی بڑے تنازع کا باعث بن سکتی ہے۔دوسری جانب آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ خطرات کے پیش نظر اعلیٰ تربیتی معیار اور آپریشنل تیاریاں ناگزیر ہیں، ملک کے بہترین مفاد کے لیے قوم اور تمام ملکی اداروں کو مربوط انداز میں کام کرنا ہو گا، قومی ترقی کے لیے صرف اور صرف عزم صمیم اور اتحاد ضرور ی ہے،دنیا کی کوئی طاقت پاکستان کے وجود کو ختم نہیں کر سکتی ، ان شاء اللہ پاکستان جلد اقوام عالم کی صف اول میں شامل ہو گا۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف نے ان خیالات کا اظہار منگلا کور کے دورے کے دوران افسروں اور جوانوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔آرمی چیف نے وہاں جاری تربیتی مشقوں کا معائنہ کیا۔جنرل باجوہ نے اپنے خطاب میں قائد اعظم محمد علی جناح ؒ کے اقوال کا حوالہ دیا۔
بشکریہ جسارتbody {direction:rtl;} a {display:none;}