بدقسمت ناگاساکی، جو اصل ہدف ہی نہ تھا

بدقسمت ناگاساکی، جو اصل ہدف ہی نہ تھا

August 09, 2018 - 16:45
Posted in:

1945 میں ایک عام جاپانی کی زندگی بہت مشکل ہو گئی تھی۔ انڈے، دودھ، چائے اور کافی دکانوں سے غائب ہو گئے تھے۔ سبزیاں سونے کے بھاؤ بکتی تھیں اور پیٹرول عام لوگوں کی دسترس سے باہر ہو گیا تھا۔ سڑکوں پر نجی گاڑیاں نہ ہونے کے برابر تھیں۔ صرف فوجی ٹرک نظر آتے تھے یا پھر پیدل یا سائیکل سوار شہری۔ چھ اگست 1945 کو صبح سویرے جاپانی ریڈاروں نے دیکھا کہ چند امریکی جہاز جنوب کی طرف سے اڑتے ہوئے آ رہے ہیں۔ سائرن بجنا شروع ہو گئے، ریڈیو نشریات بند ہو گئیں۔ اسی بارے میںناگاساکی پر ایٹم بم گرانے کا فیصلہ کیسے ہوا؟ہیروشیما پر گرنے والا ایٹم بم لےجانے والا بحری جہاز مل گیا امریکہ آخر کتنا بُرا ہے؟اس وقت پیٹرول کی اس قدر قلت تھی کہ ان جہازوں کو روکنے کے لیے جاپانی جہاز اڑ نہیں سکے۔ آٹھ بجے ریڈیو پروگرام دوبارہ شروع کر دیے گئے۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}