انڈیا: کھلاڑیوں نے انعام میں ملنے والی گائیں لوٹا دیں

انڈیا: کھلاڑیوں نے انعام میں ملنے والی گائیں لوٹا دیں

January 08, 2018 - 22:25
Posted in:

انڈین ریاست ہریانا میں تین خواتین باکسروں نے گزشتہ مہینے ریاست کے زرعی وزیر اوم پرکاش دھنکھڑ سے انعام میں ملنے والی گائیں واپس کر دی ہیں۔ ریاست کی بی جے پی حکومت نے گزشتہ برس نومبر میں قومی چیمپئن شپ میں میڈل جیتنے والی خواتین باکسروں کو انعام میں ایک ایک گائے دی تھی۔ یہ گائیں ان کے خاندان کے لیے مصیبت بن گئیں ہیں۔ مشکل اتنی بڑھ گئی کہ تین خواتین باکسروں نے اپنی گائے ریاستی حکومت کو واپس کر دی ہے۔ تین کھلاڑیوں نیتو، جیوتی اور ششی کے بعد اب چوتھی کھلاڑی انوپما بھی اپنی گائے لوٹانے پر غور کر رہی ہے۔ انوپما نے بی بی سی کو فون پر بتایا کہ ان کی گائے ٹھیک سے دودھ نہیں دے رہی ہے۔ ان کے مطابق گائے کو گھر لانے کے بعد اس کے لیے دس ہزار کا چارا خریدا جا چکا ہے لیکن وہ آج تک صرف تین لیٹر دودھ ہی دیتی ہے۔ اس لیے وہ بھی اپنی گائے لوٹانا چاہتی ہیں۔یہ بھی پڑھیے’گائے کو قومی جانور قرار دیا جائے‘ہر گائے کا ہو گا اپنا نشان!انڈین خواتین کے چہرے پر گائے کا ماسک کیوں؟

ہریانا کی کھرانا ڈیری کے مالک راجیو کھرانا نے بتایا کہ ہریانا حکومت نے ان سے چھ گائیں خریدی تھیں جن میں ہر ایک گائے کی قیمت چالیس سے پچاس ہزار روپے کے درمیان ہے۔ ان کے مطابق ’ہم نے سبھی اچھی نسل کی گائیں بیچی ہیں ہمارے پاس سبھی اچھی طرح دودھ دے رہی تھیں۔ صرف ایک گائے کا بچہ مرنے کے بعد سے وہ دودھ نہیں دے رہی تھی۔ ہم نے تین گائیں واپس لے لی ہیں اور ان کھلاڑیوں سے کہا ہے کہ وہ خود ڈیری آئیں اور یہاں دودھ نکال کر دیکھ لیں اور اپنی پسند کی گائے لے جائیں۔‘ہریانا کے زرعی وزیر اوم پرکاش دھنکھڑ نے کہا ہے کہ اگر کھلاڑیوں کو انعام میں ملی گائے پسند نہیں ہے تو وہ پوری ریاست میں کہیں اور سے اپنی پسند کی گائے خرید لیں۔ ان کا کہنا ہے کہ کھلاڑی اگر نئی گائے کا بل ان کے پاس بھیجیں تو اس کی ادائیگی کر دی جائے گی۔

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}