الہ آباد: ’نام کی تبدیلی نے شہر کی روح کو قتل کر دیا‘

الہ آباد: ’نام کی تبدیلی نے شہر کی روح کو قتل کر دیا‘

November 09, 2018 - 11:43
Posted in:

آپ کا کیا نام ہے؟ آپ کا تعلق کہاں سے ہے؟انڈیا میں کسی کے ساتھ تعرف کا آغاز انہی سوالات کے ساتھ ہوتا ہے۔ اور دوسرے سوال کے جواب میں ابھی تک میں یہی کہتا آیا ہوں کہ میں الہ آباد سے ہوں، انڈیا کے پہلے وزیر اعظم جواہر لال نیہرو اور بالیوڈ سٹار امیتابھ بچن کا شہر۔لیکن اب ایسا کہنے سے پہلے مجھے سوچنا پڑے گا کیوں کہ اب الہ آباد کا نام بدل کر پریاگراج رکھ دیا گیا ہے۔ یہ بھی پڑھیےاترپردیش کا مسلمان اتنا پریشان کیوں؟’تاج محل مغل لٹیروں کی نشانی ہے‘انڈیا کی شمالی ریاست اتر پردیش میں ہندو قوم پرست جماعت بی جے پی کی حکومت ہے۔ حکومت کا کہنا ہے کہ نام بدلنے کا مقصد شہر کی تاریخی پہچان کو بحال کرنا ہے۔ ان کی دلیل ہے کہ اس شہر کا نام 435 برس قبل مسلم حکمرانوں نے رکھا تھا۔

پروفیسر سنگھ کا خیال ہے کہ شہر کی سقافتی شناخت کو بحال کرنا ایک بہترین فیصلہ ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ’پریاگراج نام سن کر لگتا ہے کہ یہ ایک اہم ہندو مرکز تھا اور بیشتر لوگوں کو لگتا ہے کہ حکومت کا فیصلہ بالکل صحیح ہے۔‘ حالانکہ اس شہر کے متعدد رہائسیوں کے لیے اس فیصلے کو قبول کرنا آسان نہیں ہے۔ انہوں نے خود کو الہ آبادی کہنے میں ہمیشہ فخر محسوس کیا ہے۔ ایسے ہی ایک مشہور اردو شاعر اکبر الہ آبادی ہوئے ہیں۔ یہ تصور کرنا ہی نا ممکن لگتا ہے کہ کیا اب ہم ان کو ’اکبر پریاگراجی‘ کہیں گے؟!

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}