آپ فیس بک اور انسٹا گرام پر کتنا وقت گزارتے ہیں؟

آپ فیس بک اور انسٹا گرام پر کتنا وقت گزارتے ہیں؟

August 03, 2018 - 06:28
Posted in:

سماجی رابطوں کی ویب سائٹس فیس بک اور انسٹا گرام اب ایک نیا ٹول جاری کر رہی ہیں جس کی مدد سے لوگ یہ جان سکیں گے کہ انھوں نے اپنا کتنا وقت ان ایپس پر صرف کیا ہے۔ یہ اعلان ان تحفظات کے بعد جاری سامنے آیا ہے جب یہ بحو بہت عام ہے کہ سوشل میڈیا کا بہت زیادہ استعمال انسان کی ذہنی صحت پر کتنا منفی اثر ڈال سکتا ہے۔ اب صارف یہ جان سکیں گے کہ انھوں نے سوشل میڈیا پر کتنی دیر سکرولنگ کی۔ اب وہ ان ایپس پراپنی یادہانی کے لیے ریمائنڈر بھی لگا سکتے ہیں جس سے یہ معلوم ہو سکے گا کہ وہ الاٹ کردہ وقت پورا کر چکے ہیں اور وہ کچھ وقت کے لیے نوٹیفکیشن کی آواز بھی بند کر سکتے ہیں۔ انسٹاگرام پر پسندیدگی کی دوڑسوشل میڈیا کا زیادہ استعمال سماجی تنہائی کا سببسوشل میڈیا پر اچھا لگنے کے لیے کاسمیٹک سرجری کا رجحانلیکن کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ یہ بہت کارآمد نہیں ہوگا۔ بی بی سی کے پروگرام نیوز بیٹ میں بات کرتے ہوئے آکسفورڈ انٹرنیٹ انسٹی ٹیوٹ کے گرانٹ بلینک نے کہا کہ'میں یہ نہیں کہوں گا کہ یہ کوئی بہت بڑی تبدیلی ہے یا یہ لوگ جیسے فیس بک اور انسٹا گرام استعمال کرتے ہیں اس کے انداز میں کچھ تبدیل کرنے جا رہا ہے ۔ ‘وہ سمجھتے ہیں کہ یہ بھی لوگوں کو فیس بک پر رکھنے کے لیے اپنے کاروباری مفاد حاصل کرنے کا ایک طریقہ ہے۔ یہ اب بھی ان لوگوں کے لیے مددگار ہو گا جو بہت زیادہ نوٹیفکیشن سے ڈسٹرب ہوتے ہیں۔ فیس بک نے دسمبر 2017 میں ایک بلاگ پوسٹ کیا تھا جس میں اس پر بہت زیادہ وقت گزارنے کے منفی اثرات کو تسلیم کیا گیا تھا۔

ڈیجیٹل مارکیٹنگ کمپنی، دا گوٹ ایجنسی کے شریک بانی ہیری ہوگوں کہتے ہیں کہ ان تبدیلیوں کی بہت عرصے سے ضرورت تھی۔ 'ذہنی مسائل کے سامنے آنے کے بعد۔ خآص طور پر نوجوان لوگوں میں جو کہ پلیٹ فارمز پر اپنا بہت سا وقت گزارتے ہیں۔ یہ بہت اہم ہے کہ ہم چیزوں کو ان کی جگہ پر رکھیں جو کہ ہمیں ایک حد مقرر کرنے میں مدد دیں۔'ان کا خیال ہے کہ اگر لوگ یہ سمجھ جائیں کہ وہ کئی گھنٹے ان پلیٹ فارمز پر گلا رہے ہیں تو شاید پھر وہ انھیں استعمال کرتے ہوئے دو مرتبہ سوچیں گے ضرور۔ہیری کہتے ہیں کہ ٹین ایج میں 15 سے 16 گھنٹے ٹوئٹر استعمال کرتے تھے اور اب جب وہ اس کے بارے میں سوچتے ہیں تو پتہ چلتا ہے کہ وہ کتنا غیر صحت مندانہ تھا۔ وہ کہتے ہیں کہ یہ لوگوں پر منحصر ہے کہ وہ سوشل میڈیا کے استعمال کو کیسے کنٹرول کرتے ہیں۔ 'ہم ہی وہ ہیں جو فون کو کھلولتے ہیں۔ ہم وہ ہیں جو انسٹا گرام پر انگلی رکھتے ہیں۔ ہم یہ سب ایپل اور فیس بک کے ہاتھ میں نہیں دے سکتے ہیں کہ وہ ان مسائل کو حل کریں۔'

BBCUrdu.com بشکریہbody {direction:rtl;} a {display:none;}