مہمند ایجنسی میں عید میلوں پر پابندی

Printer-friendly versionSend by emailPDF version

مہمند ایجنسی میں عید میلوں پر پابندی

امن و امان کی صورت حال کومستحکم کرنے اور دہشت گرد کارروائیوں کو ناکام بنانے کے لیے پولیٹکل انتظامیہ اور قبائلی عمائدین کے جرگے تواتر کے ساتھ ہو رہے ہیں

پاکستان میں وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں عید الفطر کے موقع پر ہر قسم کے میلوں پر پابندی عائد کرنے کے ساتھ لوگوں کو محتط رہنے کی ہدایت جاری کردی گئی ہے۔صحافی انور شاہ کے مطابق مقامی افراد کے مطابق یہ پابندی پولیٹیکل انتظامیہ کی جانب سے تحصیل حلیمزئی میں عائد کی گئی ہے جہاں ذرائع کے مطابق یہ فیصلہ امن کی صورت حال کو برقرار رکھنے کے لیے پیش بندی کے طور پر کیا گیا ہے۔٭ ’ذمہ داریاں پوری نہ کرنے پر قبائلیوں کی مراعات بند‘مہمند ایجنسی کے مقامی صحافی نے بتایا کہ بد امنی کے خدشے کے پیش نظر انتظامیہ کی جانب سے تحصیل حلیمزئی کے مختلف مقامات پر مساجدوں میں لاؤڈ سپیکروں کے ذریعے اعلانات کر کے لوگوں کو بتایا گیا ہے کہ وہ دہشت گردی کے خطرے کے پیش نظر محتاط رہیں جب کہ مشکوک افراد یا سامان نظر آنے پر فوری طور پر انتظامیہ کو مطلع کریں۔علاقے کے ایک مقامی شخص شاکر نے بتایا کہ یہ پابندی عید کے چار دنوں کے لیے ہے۔ ان کے مطابق امن و امان کی خراب صورت حال کے باعث گذشتہ کچھ سالوں سے علاقے میں عید اور دیگر تہواروں کے مواقعوں پر محفلوں اور میلوں کا انعقاد نہیں ہو رہا۔اس حوالے سے اپر مہمند ایجنسی کے اسسٹنٹ پولیٹکل ایجنٹ حسیب الرحمان نے بتایا کہ سرکاری سطح پر اس طرح کی کوئی پابندی نہیں لگائی گئی تاہم موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی ہے اور لوگوں کو محتاط رہنے کی ہدایت کی گئی ہیں۔خیال رہے کہ مہمند ایجنسی میں حالیہ کچھ عرصے سے بد امنی کی فضا ہے اور امن و امان کی صورت حال کومستحکم کرنے اور دہشت گرد کارروائیوں کو ناکام بنانے کے لیے پولیٹکل انتظامیہ اور قبائلی عمائدین کے جرگے تواتر کے ساتھ ہو رہے ہیں جس میں قبائلی عمائدین پر زور دیا جا رہا ہے کہ وہ دہشت گردی کے خلاف حکومت کا ساتھ دیں۔

BBCUrdu.com بشکریہ