دماغی طور پر مردہ خاتون نے بچے کو جنم دیا

Printer-friendly versionSend by emailPDF version

دماغی طور پر مردہ خاتون نے بچے کو جنم دیا

ڈاکٹروں کا کہنا ہے بچے کا جب منگل کو جنم ہوا تو وہ اچھی حالت میں تھا

پرتگال میں ہسپتال انتظامیہ کے مطابق دماغی طور پر مردہ قرار دی گئی خاتون نے ایک بچے کو جنم دیا تھا، اس خاتون کا دماغ تقریباً چار ماہ سے مردہ حالت میں تھا۔بچے کی پیدائش لزبن ہسپتال کے سیزرین سیکشن میں 32 ہفتوں کے بعد ہوئی اور اس کا وزن 2.35 کلوگرام تھا۔اس خاتون کو 20 فروری کو دماغ کی شریان پھٹنے کے بعد دماغی طور پر مردہ قرار دے دیا گیا ہے۔اس وقت وہ خاتون حاملہ تھیں اور طبعی معائنوں سے سامنے آیا کہ جنم لینے والا بچہ صحت مند حالت میں ہے، جس کے بعد اس کے بچے کے والد نے اسے اسی حالت میں رکھنے کی حامی بھری تھی۔ڈاکٹروں کا کہنا ہے بچے کا جب منگل کو جنم ہوا تو وہ اچھی حالت میں تھا۔ تاہم انھوں نے یہ واضح نہیں کیا کہا ابھی تک وہ خاتون مصنوعی طور پر زندہ رکھا گیا ہے یا نہیں۔خیال رہے کہ کسی بھی خاتون کے دماغ کو مردہ قرار دیے جانے کے بعد رحم میں بچے کے پرورش پانے کا یہ طویل ترین دورانیہ ہے۔اس سے قبل جنوری میں پولینڈ کے شہر راکلا میں اسی طرح ایک بچے کی پیدائش ماں کا دماغ مردہ قرار دیے جانے کے 55 روز بعد ہوئی تھی۔پیدائش کے وقت اس بچے کا وزن ایک کلوگرام تھا اور اپریل میں اسے گھر بھیج دیا گیا تھا۔

BBCUrdu.com بشکریہ